The news is by your side.

Advertisement

ساڑھے تین کروڑ سال قدیم چیتے کے ڈھانچے کی نیلامی کا اعلان

جینیوا: سوئٹزرلینڈ کے ماہرین نے دریافت ہونے والے کروڑوں سال قدیم چیتے کے ڈھانچے کو آئندہ ہفتے فروخت کرنے کا اعلان کردیا۔

فرانسیسی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق سوئٹزرلینڈ کے شہر جینیوا میں آئندہ ہفتے اُس چیتے کے ڈھانچے کو نیلامی کے لیے پیش کیا جائے گا جس کے دانت تلوار کی طرح ہیں۔

رپورٹ کے مطابق 120 سینٹی میٹر لمبے ڈھانچے کو 8 دسمبر کو نیلامی کے لیے پیش کیا جائے گا، بولی کی قیمت 60 ہزار سوئس فرینکس سے شروع کی جائے گی اور سب سے زیادہ بولی لگانے خوش نصیب شخص کو یہ ڈھانچہ دے دیا جائے گا۔

ماہرین کے مطابق چیتے کا یہ ڈھانچہ 3 کروڑ 7 لاکھ سال قدیم ہے جو 90 فیصد مکمل حالت میں موجود ہے۔

نیلام گھر کے ڈائریکٹر برنارڈ پیگوئیٹ کا کہنا تھا کہ ’ڈھانچے کی دریافت غیرمعمولی ہے، ہم نے اس کو مکمل کرنے کے لیے کچھ گمشدہ ہڈیوں کو تھری ڈی پرنٹر کی مدد سے تیار کیا‘۔

سوئٹزرلینڈ کے محکمہ کسٹم سے تعلق رکھنے والے افسر یان کوئین کا کہنا تھا کہ ’چیتے کا یہ ڈھانچہ امریکا کی جنوبی ریاست ڈکوٹا میں 2019 میں ہونے والی کھدائی کے دوران محکمہ آثار قدیمہ کے ماہرین کو ملا تھا‘۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’تلوار جیسے دانت رکھنے والے چیتے کی دریافت سائنسی دلچسپی کے لیے کوئی نہیں نئی ہے کیونکہ اس سے قبل بھی درجنوں ایسی دریافتیں ہوچکی ہیں، البتہ یہ اہم ہے کہ زمین سے برآمد ہونے والا ڈھانچہ صرف سائنسی نہیں بلکہ جمالیاتی اعتبار سے بھی اہمیت کا حامل ہے‘۔

Comments

یہ بھی پڑھیں