The news is by your side.

Advertisement

صادق خان،ڈونلڈ ٹرمپ کو اسلامی تعلیم دینا چاہتے ہیں

لندن : لندن کے نو منتخب مئیر صادق خان نے ڈونلڈ ٹرمپ کو اپنے گھر آنے کی دعوت دی ہے،جہاں وہ ٹرمپ کے ساتھ اسلام اور اس کے مغربی اقدار سے تعلق پر تبادلہ خیال کرنا چاہتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق اپنے ایک انٹرویو میں نومنتخب مئیر برطانیہ صادق خان جو ایک بس ڈرائیور کے بیٹے ہیں نے کہا کہ ڈونلڈ ٹرمپ اسلام کی تعلیمات سے نابلد ہیں،وہ اسلام کے بارے میں غلط تصور رکھتے ہیں،شاید اسی لیے ڈونلڈ ٹرمپ اسلام اور مسلمانوں کے خلاف نفرت آمیز بیانات دیتے رہتے ہیں۔

یاد رہے ڈونلڈ ٹرمپ نے حال ہی میں ایک متنازعہ بیان دیا تھا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ مسلمان نوجوان انتہا پسندوں کے ہاتھوں میں کھیل رہے ہیں،انتہا پسندوں کے لیے نوجون آسان شکار ہیں۔جو ملک میں دہشت گردی کا موجب بن رہے ہیں۔

donald-trump

لندن کے ایک پرائمری اسکول کے دورے پرلندن‌کے‌پہلے‌مسلمان‌مئیر صادق خان کا کہنا تھا کہ “مسلمانوں اور مغرب کے درمیان کوئی مطابقت نہیں “کآ دعوی کرنا،اور اس دعوی کے نتیجے میں مسلمانوں کی مغرب میں آمد پر پابندی کا مطالبہ کرنا بذات خود نہایت خطرناک عمل اور انتہا پسندی ہے۔

واضح رہے پچھلے سال دسمبر میں امریکہ کی ایک ریاست میں پبلک مقام پر فائرنگ کا ایک واقعہ پیش آیا تھا،تحقیقاتی اداروں نے دہشت گردی کے اس واقعہ کا ذمہ دار داعش کو قرار دیا تھا،جس پر ڈونلڈ ٹرمپ نے مسلمانوں کے متحدہ ریاست ہائے امریکہ میں داخلے پر عارضی پابندی کا مطالبہ کر دیا تھا۔

ڈونلڈ کے اس متنازعہ بیان کے بعد دنیا بھر کے سیاسی و مذہبی رہنماؤں نے تنقید اور سخت مذمت کی تھی۔

اس موقع پر نو منتخب مسلم مئیر لندن نے کہا وہ ڈونلڈ ٹرمپ کو لندن مدعو کرنا چاہتے ہیں،تاکہ وہ خود کو بہ طور ایسے‌مسلمان کے متعارف کرانا چاہتا ہوں جو بہ طور برطانوی شہری کے مغربی اقدار سے نہ‌ صرف‌ خود کو ہم آہنگ کیے ہوئے ہیں بلکہ اس پر فخر کرتے‌ ہیں۔

Sadiq-1

پاکستانی‌ںژاد برطانوی‌شہری‌صادق علی خان نے مزید کہا کہ میرے جیسے ہزاروں مسلمان ہیں جو مغربی طرزِ زندگی اپنائے ہوئے ہیں،اور وہ برطانوی شہری ہونے پر فخر بھی کرتے ہیں،میں ان سب کو‌ڈونلڈ ٹرمپ‌ سے ملوانا چاہتا ہوں،تا کہ‌ وہ‌ حقائق جان‌ سکیں۔

صادق خان نے خواہش ظاہر کی وہ ڈونلڈ ٹرمپ کو اسلام کی تعلیمات سے روشناس کرانے چاہتے ہیں،جس سے ڈونلڈ ٹرمپ کو یہ سمجھنے میں آسانی پیدا ہو جائے گی کہ ایک مسلمان ایک مغربی اقدار سمیت کسی بھی ماحول میں کیسے رچ بس سکتا ہے؟

ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے مسلمانوں کی امریکہ پرآامد پر پابندی لگانے کے مطالبے میں صادق خان کو استثنیٰ دینے پر صادق خان کاکہںا تھا کہ مجھے ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے استثنیٰ کی ضرورت نہیں، میں اس سال نومبر میں امریکہ جاؤں گا۔

یاد رہے پیشہ کے اعتبار سے وکیل اور متوسط طبقے سے تعلق رکھنے صادق خان کے مدمقابل زیک گولڈ اسمتھ اور برطانیہ‌کے وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون نے صادق خان پر انتہا پسند مسلمانوں کے ساتھ تعلقات کا انکشاف کیا تھا۔

Zac-Goldsmith

لیبر پارٹی سے تعلق رکھنے والے صادق خان نے کنزرویٹوز رہنماؤں کی ان بے بنیاد الزامات کی سختی سے تردید کی تھی۔

صادق خان نے اس موقع پر ڈونلڈ ٹرمپ کی متعصبانہ بیانات کے باوجود امریکی عوام کی جانب سے حاصل پذیرائی پر مسرت کا اظہار کرتے ہوئے شکریہ ادا کیا ہے،انہوں نے سابق سیکرٹری ہلری کلنٹن کی جانب الیکشن جیتنے کے بعد دی گئی مبارکباد پر بھی شکریہ ادا کیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں