اسپاٹ فکسنگ میں ملوث کھلاڑیوں پر تاحیات پابندی ہونی چاہیے، سعید اجمل saeed ajmal
The news is by your side.

Advertisement

مجھے کیوں‌ نہیں‌ کھلایا جارہا؟ سعید اجمل آب دیدہ

کراچی : قومی کرکٹ ٹیم کے سابق معروف اسپنرز سعید اجمل نے کہا ہے کہ میں کرکٹ کیوں نہیں کھیل سکتا؟ کیا میری ٹانگیں ٹوٹی ہوئی ہیں؟ اگر مجھے نہیں کھلانا تو ریٹائرمنٹ کا لیٹر گھر بھیج دیا جائے،اسپاٹ فکسنگ میں ملوث کھلاڑیوں پر تاحیات پابندی عائد ہونی چاہیے۔

کراچی میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے سعید اجمل نے کہا کہ فکسرز کے خلاف سخت ایکشن لینا چاہیے اور ملک و قوم کی بدنامی کا باعث بننے والے کھلاڑیوں پر تاحیات پابندی لگا دینی چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ 2010 کے بعد اسٹیڈیم میں فکسر فکسر کی آوازیں لگتی تھیں جس کے بعد ہم نے بڑی مشکل سے اپنا امیج بہتر کیا تھا لیکن سارے کیے کرائے پر پانی پھیر دیا گیا اور پی ایس ایل میں اسپاٹ فکسنگ کا ناخوشگوار واقعہ پھر پیش آگیا۔

کئی برس سے ٹیم میں جگہ نہ بنا پانے والے سعید اجمل ٹیم میں شامل نہ کیے جانے پر دل برداشتہ ہوگئے اور آبدیدہ آنکھوں کے ساتھ شکوہ کیا کہ ڈومیسٹک کرکٹ میں بہترین پرفارمنس کے باوجود پاکستان کپ کے لیے ڈارفٹنگ میں بھی میرا نام ہی نہیں ڈالا گیا۔

سعید اجمل نے کہا کہ آخر مجھے کیوں نہیں کھلایا جارہا؟ کیا میری ٹانگیں ٹوٹی ہوئی ہیں؟کیا میں کھیل نہیں رہا؟ ابھی میں ہانگ کانگ سے ٹاپ کرکے آیا ہوں اس سے پہلے میں نے ڈومیسٹک کرکٹ میں ٹاپ کیا، کیا میں نے بالنگ نہیں کی؟ اصل بات یہ ہے کہ ہمیں ہر جگہ کھیلنے سے روکا جارہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگر بورڈ کے حکام نے مجھے گھر پر بٹھائے رکھنے کا فیصلہ کر لیا ہے تو پھر پی سی بی میرے گھر پر ریٹائرمنٹ کا لیٹر ہی بھجوادے۔

انہوں نے کہا کہ سینئرز کھلاڑیوں کو نظر انداز کیا جاتا رہا تواسپاٹ فکسنگ جیسے واقعات جنم لیتے رہیں گے اور کرپشن کا یہ جن قابو میں نہیں آسکے گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں