The news is by your side.

Advertisement

آئندہ مالی سال تنخواہ دارطبقےکو67ارب ٹیکس ریلیف دینے کا امکان

اسلام آباد : آئندہ مالی سال بجٹ میں تنخواہ دار  طبقے کیلئے سرسٹھ ارب روپے کا ریلیف دیئے جانے کا امکان ہے جبکہ بجٹ میں انکم ٹیکس کی شرح میں کمی متوقع ہے۔

وزارت خزانہ زرائع کے مطابق حکومت کی جانب سے آئندہ مالی سال کے لیے تنخواہ دار طبقے کیلئے سرسٹھ ارب کا ٹیکس ریلیف متوقع ہے جبکہ انکم ٹیکس سے مستثنی آمدنی کی سالانہ کو حد چار لاکھ روپے سے بڑھا کر پانچ لاکھ کیے جانے کا امکان ہے۔

تنخواہ دار طبقے پر انکم ٹیکس کی زیادہ سے زیادہ شرح کو بیس فیصد کیے جانے کا امکان ہے۔

معاشی ماہرین کے مطابق ٹیکس ریلیف سے کم آمدنی والے افراد پر ٹیکس کا بوجھ نوے فیصد جبکہ زائد آمدن والے افراد پر ٹیکس ریٹ میں تینتالیس فیصد کمی ہوگی۔

ٹیکس ریلیف وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی ہدایت پر کی جائے گی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم تنخواہ دارطبقےکو100 ارب تک کاٹیکس ریلیف دینا چاہتے ہیں جبکہ مشیرخزانہ اورایف بی آرحکام ٹیکس ریٹ میں زائد کمی کے حق میں نہیں۔


مزید پڑھیں:  آئندہ بجٹ میں سرکاری ملازمین کے لیے خوشخبری


اس سے قبل وزارت خزانہ کے ذرائع کا کہنا تھا کہ آئندہ بجٹ میں ملازمین کی تنخواہوں میں 15 فیصد ایڈ ہاک ریلیف، الاﺅنس اور پنشن میں 20 فیصد تک اضافے کا امکان ہے۔ سرکاری ملازمین کا لیٹ سٹنگ اور میڈیکل الاﺅنس بھی بڑھانے کی تجویز زیر غور ہے۔

یاد رہے کہ وزیراعظم کے مشیر برائے خزانہ امور مفتاح اسماعیل نے آئندہ مالی سال کا بجٹ 27 اپریل کو پیش کرنے کا اعلان کیا تھا اور کہا تھا کہ حکومت کی مدت 31 مئی کو ختم ہو جائے گی ، اس لئے حکومت کی کوشش ہے کہ وفاقی بجٹ جلد پیش کرکے اپنی ہی دور حکومت میں منظور کروالیا جائے۔

خیال رہے کہ یہ ن لیگ حکومت کا آخری بجٹ ہے ، اس لئے امید کی جارہی ہے کہ عوام کو زیادہ سے زیادہ ریلیف دیا جائے گا۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں