The news is by your side.

Advertisement

سامعہ شاہد قتل کیس، عدالت کا فریقین سے 24 نومبر کو جواب طلب

لاہور: ہائی کورٹ نے غیرت کے نام پر قتل ہونے والی برطانوی شہری سامعہ شاہد کے قتل کی تفتیش اور ٹرائل لاہور منتقل کرنے کے لیے دائر درخواست پر ملزمان سمیت  فریقین  کو دوبارہ نوٹس جاری کردیے۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں برطانوی خاتون شہری سامعہ شاہد قتل کی کیس سماعت جسٹس سردار شمیم کی سربراہی میں کی گئی۔ اس موقع پر مدعی کے وکیل نے مؤقف اختیار کیا کہ برطانوی شہری سامعہ کو اُس کے سابق شوہر شکیل نے مقتولہ کے باپ سے ساتھ مل کر غیرت کے نام پر قتل کیا تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ مدعی اور اس کیس کے گواہان کی جان کو شدید خطرات لاحق ہیں  لہذا معاملے کی حساست اور انصاف کے تقاضوں کے پیش نظر مقدمے کی تفیتش اور ٹرائل لاہور منتقل کیا جائے۔

پڑھیں:  سامعہ شاہد قتل کیس میں پیشرفت،ایس ایچ او گرفتار

 بعدازاں ملزمان کے گواہان نے عدالت سے جواب داخل کرنے کے لیے مہلت طلب کرنے کی درخواست کی جس پر عدالت نے فریقین کو 24 نومبر کے نوٹس جاری کرتے ہوئے اگلی سماعت پر جواب جمع کرنے کے احکامات جاری کیے۔
یاد رہے کہ پاکستانی نژاد برطانوی خاتون سامعہ شاہد کو 20 جولائی کو قتل کیا گیا تھا جس کا الزام اُن کے سابق شوہد چوہدری شکیل پر عائد کیا گیا تھا، بعد ازاں پولیس نے منگلا کے علاقے میں تعینات مقامی تھانے کے انچارج کو گرفتار کرلیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں