The news is by your side.

Advertisement

فواد کی جگہ منتخب ہونے والے لڑکے پرفارمنس دے رہے ہیں، سرفراز

لاہور: قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے کہا ہے کہ ٹیم میں کھلاڑیوں کو مشاورت کے بعد منتخب کیا جاتاہے، فواد عالم کو اس بار شامل نہیں کیا تو اس کا یہ مطلب نہیں وہ کبھی نہیں کھیل سکتے، اُن کی جگہ ٹیم میں جن کھلاڑیوں کو شامل کیا گیا وہ اچھی پرفارمنس دے رہے ہیں۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ کوشش ہوتی ہے بہترین پلیئرز کو ٹیم میں شامل کیا جائے اور  اسکواڈ میں منتخب ہونے والے لڑکوں کی پرفارمنس دیکھی جاتی ہے، ٹیم کی سیلکشن کسی ایک شخص کی مرضی سے نہیں بلکہ سب کی مشاورت سے کی جاتی ہے۔

 اُن کا کہنا تھا کہ نئے لڑکوں کو انٹرنیشنل کرکٹ کھیلنے کا موقع مل رہا ہے جو اچھی بات ہے، اگر اس بار فواد کو شامل نہیں کیا گیا تو اس کا یہ مطالب نہیں کہ وہ  ٹیم میں کبھی شامل نہیں ہوسکتا، نیٹ پریکٹس دیکھنے کے بعد دورہ انگلینڈ اور آئرلینڈ کے لیے کھلاڑیوں کا انتخاب کیا گیا، فواد نے آخری ٹیسٹ میچ 2009 میں کھیلا تھا، اُن کی جگہ جن لڑکوں کو شامل کیا گیا وہ بھی پرفارمنس دکھا رہے ہیں۔

مزید پڑھیں: ’فواد عالم کو انصاف دو‘

سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ انگلینڈ کی کنڈیشن کو دیکھتے ہوئے ٹیم میں اسپنرز کو شامل کیا گیا، یاسر شاہ ان فٹ ہیں تو اُن کی جگہ بھی چار باؤلرز کو نیٹ پریکٹس میں بلایا گیا جن میں سے اسکواڈ میں صرف ایک ہی شامل ہوا، لڑکوں کو کیمپ بلانے کا مقصد انہیں اسکواڈ میں شامل کرنا تھا۔

قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان کا کہنا تھا کہ ’25 کھلاڑیوں کی ٹیم منتخب کرنی تھی تو سلیکشن کمیٹی نے مشاورت اور سوچ بچار کے بعد کھلاڑیوں کے نام فائنل کیے، اگر کوئی کھلاڑی آج منتخب نہیں ہوا تو کل وہ ضرور پاکستان کے لیے کھیل سکے گا‘۔

اُن کا کہنا تھا کہ دورہ انگلینڈ اور آئرلینڈ کے لیے اچھی ٹیم منتخب کی گئی، ہماری کوشش ہوگی کہ سیریز میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرکے فتح حاصل کریں۔

مزید پڑھیں: ٹیم میں‌عدم شمولیت پر دکھ ہے، مگر مایوس نہیں‌، محنت جاری رکھوں‌ گا، فواد عالم

واضح رہے کہ گزشتہ روز چیف سلیکٹر انضمام الحق نے 16 رکنی اسکواڈ کا اعلان کیا تھا تاہم فواد عالم کو ڈومیسٹک میں اچھی کارکردگی دکھانے اور فٹنس میں خود کو بہترین ثابت کرنے کے باوجود انہیں منتخب نہیں کیا گیا تھا جس پر شائقین کرکٹ نے شدید احتجاج ریکارڈ کرتے ہوئے انضمام الحق کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

ٹیسٹ کرکٹر کی عدم شمولیت پر سابق فاسٹ بالر وسیم اکرم نے بھی حیرانی کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ ڈومیسٹک میں رنز کرنے کے باوجود فواد عالم میں شامل نہ کرنا سمجھ سے بالاتر ہے۔ خیال رہے کہ فواد عالم نے اپنے 15 سالہ فرسٹ کلاس کیریئر کے دوران 145 میچوں میں 55.37 کی اوسط سے 27 سنچریوں کے ساتھ 10 ہزار 7 سو 42 رنز بنارکھے ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں، مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں