site
stats
کھیل

عامر سہیل کی اے آر وائی نیوز کو دھمکی

کراچی : اے آر وائی نیوز کی جانب سے سچ دکھانے پرعامرسہیل حواس باختہ ہوگئے، سابق کرکٹر اے آروائی نیوز کے خلاف غنڈا گردی پر اتر آئے، کراچی کنگز کے خلاف بولنے کی دھمکی دے دی۔

 تفصیلات کے مطابق قومی ٹیم کے کپتان سرفرازاحمد پر الزامات کے بعد سابق کرکٹرعامرسہیل نے کراچی کنگز کے خلاف محاذ کھولنے کی دھمکی دے دی۔ ان کا کہنا ہے کہ اے آر وائی پیچھے ہٹ جاؤ، ورنہ سما ٹی وی پربیٹھ کر پروپیگنڈا کروں گا۔

عامر سہیل نے پی ایس ایل کی  ٹیم کراچی کنگز کے مالک سلمان اقبال کو دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ اب میں کراچی کنگز کے خلاف بات کروں گا۔

عامر سہیل دماغی علاج کرائیں، کسی نفسیاتی ڈاکٹر سے رابطہ کریں

عامرسہیل کے بیان پر اے آر وائی نیوز کے سینئر اینکر پرسن اقرارالحسن نے نے اپنے شدید رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ عامر سہیل کو اپنی ذہنی بیماری کا علاج کروانا چاہیئے، ایسے موقع پر جب پوری قوم خوش ہے اور اپنی قومی ٹیم کو سپورٹ بھی کررہی ہے تو ایسے میں ان کا یہ بیان دماغ کے خلل کی عکاسی کرتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس کے بجائے کہ عامر سہیل اپنے بیان پر شرمندہ ہوتے الٹا وہ کراچی کنگز کو دھمکیاں دینے پراتر آئے ہیں، اقرار الحسن نے کہا کہ وہ آئیں ہم تیار بیٹھے ہیں۔

واضح رہے کہ سابق کرکٹر عامر سہیل نے ایک نجی ٹیلی وژن پر ٹاک شو کے دوران قومی کرکٹ ٹیم خصوصاً سرفراز احمد کیخلاف بیان دیا تھا، عامرسہیل نے قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد پرالزامات لگائے تھے۔

دیکھیں ویڈیو:

عامرسہیل نے کہا تھا کہ سری لنکا کیخلاف میچ میں ہونے والی جیت میں سرفراز احمد کا کمال نہیں، یہ مخصوص ایجنڈا تھا۔ عامر سہیل کے اس بیان کے بعد پاکستان کے خلاف زہر اگلنے والے بھارتی میڈیا کو موقع ملا اور اس نے پاکستان کیخلاف ہرزہ سرائی شروع کردی تھی۔

پاکستان کی فتوحات پربھارتی میڈیا نے سوالات اٹھانا شروع کردیئے۔ سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ پاکستان کی جیت کس کو ہضم نہیں ہورہی؟ کیا عامر سہیل بھارت کے ایجنڈے پر کام کررہے ہیں؟ اہم معرکے سے قبل عامر سہیل نے ٹیم پر الزام کیسے لگادیا؟ کیا ثبوت ہیں ان کے پاس؟

عامر نے ٹیم کا مورال گرانے کی کوشش کی۔ کیا وہ بھارت کی لائن چل رہے ہیں۔ عامر سہیل کی پاکستان کی جیت کو متنازع بنانے کی کوشش پر پاکستان دشمن بھارتی میڈیا نے حسب روایت جلتی پرتیل کا کام کیا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top