The news is by your side.

Advertisement

امریکا نےہمارے جوہری پروگرام پر پابندی لگانے کی کوشش کی، سرتاج عزیز

اسلام آباد: مشیرخارجہ سرتاج عزیز نے کہا ہے کہ حکومت سنبھالی تو پاک امریکا تعلقات مشکلات کا شکار تھے، امریکا نے ہمارے جوہری پروگرام پر پابندی عائد کرنے کی کوشش کی،تین برس میں پاک امریکا تعلقات میں بہتری آئی ہے۔

سرکاری ٹیلی ویژن کو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے مشیر خارجہ کا کہنا تھا کہ نائن الیون کے بعد عالمی سطح پر تبدیلی رونما ہوئی، اسلام مخالف نظریات پر کچھ ممالک نے اتحاد قائم کیے، حکومت میں آئے تو امریکا کے ساتھ تعلقات بہتر نہ تھے اس نے ہمارے جوہری پروگرام پر قدغن لگانے کی کوشش کی تاہم تین برس میں امریکا کے ساتھ تعلقات میں بہتری آئی۔

سرتاج عزیز نے بتایا کہ ہم نے تمام دہشت گردوں کے خلاف بلاتفریق کارروائی کی اور اس جنگ میں نمایاں کامیابی حاصل کی،شمالی وزیرستان میں دہشت گردوں کا انفرا اسٹرکچر تباہ ہوچکا،ہم آپریشن ضرب عضب میں مسلسل کامیابیاں حاصل کررہے ہیں، افغانستان، عراق، شام اور لیببا کی صورتحال سب کے سامنے ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ڈرون حملوں کا معاملہ گزشتہ حکومتوں کی پالیسیوں کا نتیجہ ہے اس کا الزام ہم پر عائد نہیں کیا جاسکتا، 2013ء میں 117 ڈرون حملے ہوئے رواں سال یہ تعداد صرف تین ہے۔

بھارت کے ساتھ کشیدگی اور مذاکرات کے سوال پر ان کا کہنا تھا کہ چاہتے ہیں کہ بھارت کے ساتھ تمام ایشوز پر جامع مذاکرات ہوں۔

طور خم سرحد کے معاملے پر انہوں نے بتایا کہ افغان نائب وزیر خارجہ سے اس معاملے پر جلد بات ہوگی، حکومت نے قومی سلامتی کے معاملے پر سمجھوتہ نہ کرنے کا موقف اپنایا ہے، بہتر اور محفوظ سرحدی پروگرام پاکستان اور افغانستان دونوں کے حق میں ہے۔

اقتصادی راہداری پر سرتاج عزیز کا کہنا تھا کہ یہ منصوبہ پورے خطے کی بہتری کے لیے ہے، اقتصادی راہداری کے لیے خصوصی سیکیورٹی ڈویژن قائم کردیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں