site
stats
پاکستان

ناکام خارجہ پالیسی اور عالمی سطح پر تنہائی کا تصور غلط ہے، سرتاج عزیز

اسلام آباد: مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے خارجہ پالیسی کی ناکامی اور عالمی سطح پر تنہائی کے تصور کو غلط قرار دے دیا۔ انہوں نے کہا کہ امریکا میں سابق سفیر کی لابنگ سے مشکلات میں اضافہ ہوا۔

قومی اسمبلی کے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے کہا کہ عالمی امور میں ہمیشہ ملکی مفادات کو ترجیح دی۔ اسلامی ممالک کے ساتھ تاریخی تعلقات ہیں۔ پاکستان افغانستان میں عدم مداخلت کی پالیسی پر کاربند ہے۔

بھارت سے کشمیر سمیت تمام امور پر بات چیت کے لیے تیار ہیں، سرتاج عزیز *

مشیر خارجہ کا کہنا تھا کہ خارجہ پالیسی کا اہم مقصد اقتصادی ترقی ہے۔ نائن الیون کے بعد عالمی سطح پر تبدیلیاں رونما ہوئیں، تاہم ایران اور افغانستان سے تعلقات معمول کے مطابق ہیں۔ ہم نے بنیادی اور قومی مفادات کا تحفظ کیا ہے۔

سرتاج عزیز کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم کو آئین کے مطابق خارجہ پالیسی پر مکمل اختیار ہے۔ عالمی منظر نامے میں تبدیلی کے پیش نظر خارجہ پالیسی تبدیل کر رہے ہیں۔ گزشتہ 3 سال میں سماجی خدمات کے شعبوں میں نمایاں بہتری آئی ہے جبکہ مختلف سماجی خدمات کی فراہمی میں نادرا اور دوسرے اداروں نے بہت معاونت کی ہے۔

امریکا نے جوہری پروگرام پر پابندی کی کوشش کی، سرتاج عزیز  *

سرتاج عزیز نے خارجہ پالیسی کی ناکامی اور عالمی سطح پر تنہائی کے تصور کو غلط قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ تاثر درست نہیں کہ ماضی میں خارجہ پالیسی درست نہیں رہی۔ پاکستان تنہائی کا شکار نہیں ہے، بلکہ پاکستان ایک پر اعتماد ملک ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top