The news is by your side.

Advertisement

رشتہ دار کے ساتھ قہوہ پینا کرونا کا سبب بن گیا، شہری پریشان

ریاض : سعودی شہری کو بیرون ملک سے آئے رشتہ دار کے ہمراہ قہوہ نوش کرنا اس وقت مہنگا پڑا جب سعودی شہری کا کرونا ٹیسٹ مثبت نکل آیا۔

تفصیلات کے مطابق سائنس دان، ڈاکٹرز اور کرونا وائرس سے متاثرہ ممالک کی حکومتیں اپنے شہریوں کو آگاہ کرچکی کہ کرونا وائرس کی وبا انسانوں سے انسانوں میں منتقل ہوتی ہے لہذا اپنے گھروں میں رہیں اور غیر ضروری باہر نہ نکلیں۔

سعودی حکومت نے بھی اپنے شہریوں کو بلا ضرورت گھروں سے نہ نکلنے کی ہدایات کررکھی ہیں لیکن مذکورہ شہری حکومتی ہدایات کو ہوا میں اڑاتے ہوئے ترکی سے آئے ہوئے عزیز کے ساتھ ملاقات کرکے چلے گئے اور اسی کے ساتھ قہوہ بھی پیا۔

عبداللہ القرنی نامی شہری نے رشتہ داروں نے بتایا کہ القرنی چند گھنٹے رشتے دار کے ساتھ گزارنے کے بعد جب گھر لوٹے تو چار دن بعد انہیں تیز بخار ہوگیا اور گلے میں بھی درد ہونے لگا۔

طبعیت کی خرابی پر شہری نے ڈاکٹرز ستے رجوع کیا تو ڈاکٹرز نے القرنی کا کرونا وائرس کا ٹیسٹ کیا کیونکہ ان میں ہلاکت خیز وبا کی علامات پائی گئی تھی۔

القرنی کی ٹیسٹ رپورٹ آئی تو معلوم ہوا کہ وہ بھی کرونا وائرس کی عالمی وبا میں مبتلا ہوگئے ہیں۔

سعودی شہری کے رشتہ داروں نے بتایا کہ اس سے قبل انہیں کسی قسم کی کوئی بیماری کا تکلیف نہیں تھی اور نہ وہ بیرون ملک کسی سفر پر گئے۔

خیال رہے کہ سعودی حکومت کی جانب سے وائرس کا پھیلاؤ روکنے کےلیے ملک بھر میں کرفیو نافذ کیا گیا ہے اور شہریوں و غیر ملکیوں کو کرفیوں کی خلاف کرنے پر جرمانے اور سزا سے بھی آگاہ کردیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ سعودی عرب میں اب تک کرونا وائرس کے 776 مریض سامنے آچکے ہیں جبکہ ہلاکت خیز وبا میں مبتلا ایک شخص ہلاک بھی ہوچکا ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں