The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب میں منشیات اسمگلنگ پر ایک اور پاکستانی کا سر قلم کردیا گیا

ملزم عمران حیدر کو سیالکوٹ سے جدہ پہنچنے پر آدھا کلو ہیروئن رکھنے کے الزام میں گرفتارکیا گیا تھا، رپورٹ

ریاض : سعودی عرب میں ہیروئن اسمگلنگ پر ایک اور  پاکستانی کو سزائے موت دے دی گئی، عمران حیدر نامی ملزم کو آدھا کلو ہیروئن اسمگل کرنے کے الزام میں موت کی سزا سنائی گئی تھی۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق سعودی عرب میں ان کے قانون کے مطابق منشیات کے مقدمے میں ایک اور پاکستانی کا سر تن سے جدا کردیا گیا۔

عمران حیدر ولد غلام حسین 12 دسمبر 2013 کو سیالکوٹ سے جدہ گیا تھا جہاں اسے سعودی پولیس نے500 گرام ہیروئن رکھنے پر گرفتار کرلیا تھا۔

مذکورہ کیس حال ہی میں ختم ہوا جس میں عمران کو سزائے موت سنائی گئی، یاد رہے کہ سعودی عرب میں معمولی سی مقدار کی منشیات پر بھی موت کی سزا دی جاتی ہے۔

اس سے قبل 11 اپریل کو منشیات اسمگلنگ کے الزام میں پاکستان سے تعلق رکھنے والے میاں بیوی کے سر قلم کردیئے گئے تھے۔ خیال رہے کہ سعودی عرب میں سزائے موت دیئے جانے کی شرح دنیا میں بلند ترین سطح پر ہے جہاں دہشت گردی، ریپ، مسلح ڈکیتی اور منشیات کی اسمگلنگ پر موت کی سزا دی جاتی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں