The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب میں تیار کار جلد دستیاب ہونے کی توقع

ریاض: سعودی حکام نے توقع ظاہر کی ہے کہ مملکت کے اندر بنائی گئی پہلی کار سنہ 2022 میں دستیاب ہوجائے گی، کار اسمبلی سینٹر کا انجینیئرنگ ڈیزائن حتمی مراحل میں ہے۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق انڈسٹریل ڈویلپمنٹ ڈپارٹمنٹ کے ڈائریکٹر محمد الزہرانی کا کہنا ہے کہ جبیل میں رائل کمیشن نے مطلوبہ انفراسٹرکچر پر کام شروع کیا ہے جو تین بین الاقوامی کار ساز کمپنیوں کو مملکت میں سرمایہ کاری کے لیے راغب کرے گا۔

محمد الزہرانی نے توقع ظاہر کی کہ سنہ 2022 میں سعودی عرب میں پہلی کار تیار ہو جائے گی۔

ان کا کہنا تھا کہ کار اسمبلی سینٹر کا انجینیئرنگ ڈیزائن حتمی مراحل میں ہے، یہ سینٹر جنوبی کوریا کے کار ساز ادارے سانگ یونگ موٹر کمپنی کے اشتراک سے بنایا جا رہا ہے۔

انڈسٹریل ڈویلپمنٹ ڈپارٹمنٹ کے ڈائریکٹر نے بتایا کہ رائل کمیشن کی جانب سے کی گئی اسٹڈی کے مطابق سنہ 2040 تک سعودی عرب میں آٹو انڈسٹری میں 10 ارب ڈالر سے زائد کی براہ راست سرمایہ کاری متوقع ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ شعبہ سعودی عرب کی جی ڈی پی میں 80 ارب ریال کا حصہ ڈالے گا اور 27 ہزار براہ راست ملازمتیں فراہم کرے گا۔

محمد الزہرانی کا مزید کہنا تھا کہ مملکت کا آٹو کمپلیکس اسٹریٹجک انڈسٹریل منصوبے کا حصہ ہے۔ جبیل انڈسٹریل سٹی اور راس الخیر انڈسٹریل سٹی گاڑیوں کی تیاری کے لیے خام مال کا 90 فیصد فراہم کرتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں