The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب : کرونا بحران کے باوجود ایک بڑے منصوبے کی تکمیل

ریاض: سعودی عرب میں عرفات، طائف واٹر انڈر پاس منصوبہ مکمل کر لیا گیا، یہ دنیا بھر میں آب رسانی کا طویل ترین نیٹ ورک ہے۔

تفصیلات کے مطابق مکہ مکرمہ گورنریٹ نے جبل الکر کے زیریں حصے سے طائف میں سرکلر روڈ تک 12.5 کلو میٹر لمبا ہے اس کا قطر 8.4 میٹر ہے۔اس منصوبے کو کرونا بحران کے باوجود مقررہ وقت سے قبل 24 گھنٹے کام کر کے مکمل کیا گیا ہے۔

کھارے پانی کو استعمال کے قابل بنانے والے سرکاری ادارے کے گورنر عبد اللہ العبد الکریم نے بتایا کہ واٹر نیٹ ورک کی تیاری کا کام بڑا چیلنج تھا۔السروات پہاڑی علاقے میں واٹر انڈر پاس بنانے کے لیے دیو ہیکل مشین سے استفادہ کیا گیا اس کی یومیہ انتہائی رفتار 60.3 میٹر ہے۔

العبد الکریم کا کہنا تھا کہ پہاڑی علاقے میں واٹر انڈر پاس تیار کرنے کے لیے جو دیو ہیکل مشینری استعمال کی گئی وہ پوری دنیا میں اپنی نوعیت کی سریع رفتار ہے، پمپنگ اسشٹیشن اور عرفات طائف واٹر پروجیکٹ بھی تیار کیا گیا ہے۔

سرکاری ادارے کے گورنر نے طائف میں اسٹراٹیجک واٹر پروجیکٹ کا دورہ کیا۔ یہ 9 ٹینکوں پر مشتمل ہے۔ ہر ٹینک میں پانی کی کھپت ایک لاکھ 70 ہزار مکعب میٹر ہے۔

پروجیکٹ ڈائریکٹر انجینیئر محمد الغامدی نے بتایا کہ یہ طائف باحہ میٹھا پانی پہنچانے والے پروجیکٹ کا پہلا مرحلہ تھا جو مکمل ہوگیا، پورا پروجیکٹ سو فیصد سعودی ہے۔ اس کی نگرانی اور اس کا تمام کام انجام دینے والے سعودی تھے پہلا مرحلہ 559 دن میں مکمل کیا گیا جبکہ دوسرا مرحلہ 2021 کی تیسری سہ ماہی میں مکمل ہوگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں