The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب: بجلی کے بلوں میں کسی قسم کا اضافہ نہیں کیا جارہا

ریاض: سعودی حکام کا کہنا ہے کہ مملکت میں مخصوص یا فکسڈ بلنگ کے صارفین پر کسی قسم کا اضافی بوجھ نہیں ڈالا جارہا اور اس حوالے سے تمام افواہیں بے بنیاد ہیں۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی الیکٹریکل کمپنی نے کہا ہے کہ جن افراد نے اپنے بجلی کے بلوں کے لیے فکسڈ کی سہولت حاصل کی ہوئی ہے انہیں پریشان ہونے کی ضرورت نہیں، فکسڈ بلوں کی فائنل ادائیگی سروس کے اختتام پر کی جاتی ہے اور اس میں کسی قسم کے اضافی چارجز شامل نہیں کیے جاتے۔

کمپنی کے مطابق سوشل میڈیا پر پھیلائی جانے والی بے بنیاد باتوں پر توجہ نہ دی جائے۔

بجلی کمپنی کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیے میں وضاحت کی گئی ہے کہ بجلی کے صارفین سوشل میڈیا کی افواہوں پر توجہ نہ دیں، جن میں کہا گیا ہے کہ فکسڈ بل کی سہولت حاصل کرنے والوں کے لیے فائنل بل کی ادائیگی سال کے اختتام پر کی جائے گی جس میں اضافی جارچز بھی شامل کیے جائیں گے۔

بجلی کمپنی نے اس حوالے سے مزید وضاحت کرتے ہوئے کہا ہے کہ فکسڈ بلنگ کی سہولت اختیاری ہے اجباری نہیں، جو اس سہولت سے مستفید ہونا چاہتا ہے وہ اسے اختیار کر سکتا ہے۔

فکسڈ بلنگ کے لیے صارف کا اوسط بل کیلکولیٹ کر کے ایک مخصوص رقم متعین کی جاتی ہے جو اسے ماہانہ بنیاد پر ادا کرنا ہوتی ہے۔

اعلامیے میں مزید کہا گیا ہے کہ فکسڈ بلنگ کی سہولت کسی بھی وقت ختم کی جاسکتی ہے جس کے لیے کمپنی کو مطلع کرنا ہوگا تاہم اس سہولت سے مستفید ہونے والوں پر کسی قسم کے اضافی چارجز عائد نہیں کیے جاتے۔

ایسے صارفین کو اس حوالے سے یہ سہولت حاصل ہوتی ہے کہ موسم گرما میں جب اضافی بجلی خرچ ہوتی ہے تو انہیں فوری طور پر اضافی بل ادا نہیں کرنا پڑتے بلکہ بل کی اضافی رقم جو کہ موسم سرما میں بجلی کے کم خرچ کی وجہ سے فکسڈ بلنگ کے طور پر کمپنی میں جمع ہوجاتی ہے، اس میں سے منہا کرلی جاتی ہے۔

اس سے صارف پر موسم گرما میں اضافی بوجھ نہیں پڑتا۔

کمپنی کی جانب سے اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ فکسڈ بلنگ کا قانون مختلف ممالک میں رائج ہے اور ان ہی اصولوں کے مطابق مملکت میں بھی صارفین کو فکسڈ بلنگ کی سہولت فراہم کی جاتی ہے جس میں ایک برس کے خرچ کو مد نظر رکھتے ہوئے صارف کا اوسط بل متعین کیا جاتا ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں