The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب، سرکاری ملازمین کو کاروبار اور پارٹ ٹائم ملازمت کی اجازت مل گئی

ریاض: سعودی عرب میں سرکاری ملازمین کو کاروبار کرنے اور نجی اداروں میں پارٹ ٹائم ملازمت کرنے کی اجازت دے دی گئی۔

غیرملکی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب میں مجلس شوریٰ کا اجلاس ڈاکٹر عبداللہ آل الشیخ کی زیر صدارت ہوا، ارکان شوریٰ نے شہری خدمات کے قانون کی دفعہ 13 میں ترمیم کرکے وہ پابندی ختم کردی جس میں سرکاری ملازمین کو کاروبار کی اجازت نہیں تھی۔

قانون میں ترمیم کے بعد سرکاری ملازمین ناصرف کاروبار کے مجاز ہوں گے بلکہ انہیں پارٹ ٹائم نجی کمپنیوں میں ملازمت کی اجازت بھی مل گئی ہے، سعودی کابینہ اس حوالے سے مخصوص زمروں کے ملازمین کے لیے لائحہ عمل جاری کرے گی۔

رپورٹ کے مطابق ارکان شوریٰ نے شہری خدمات کے قانون کی دفعہ 13 میں ترمیم سعودی وژن 2030 اور قومی تبدیلی پروگرام 2020 کے اہداف کی تکمیل کی غرض سے کی ہے۔

ماہرین کے مطابق اس ترمیم کی بدولت سعودی شہری اقتصادی فروغ میں زیادہ بہتر کردار ادا کریں گے اور آزاد تجارت میں حصہ لے سکیں گے۔

یاد رہے کہ سعودی عرب کے سول سروس قانون کے مطابق سرکاری ملازمین کو اپنے نام سے کسی قسم کا کاروبار کرنے کی اجازت نہیں ہوتی تھی۔

خیال رہے کہ کاروبار کرنے کے خواہش مند اکثر سرکاری ملازمین اپنی اہلیہ یا گھر کے دیگر افراد کے ناموں سے تجارتی سرگرمیوں میں حصہ لیتے تھے، اب سرکاری ملازمین براہ راست اپنے ناموں سے کاروبار کرسکیں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں