The news is by your side.

سعودی عرب : غیرملکیوں کیلئے بڑی سہولت کا اعلان

ریاض سعودی اعلیٰ قیادت کی جانب سے سفری پابندی والے ممالک کے اقامہ ہولڈر شہریوں کے لیے خصوصی رعایت دیتے ہوئے اقامہ اور خروج وعودہ کی مدت میں31 جنوری2022 تک توسیع کے احکامات جاری ہوچکے ہیں۔

اقاموں اور خروج وعودہ کی مدت میں توسیع کے حوالے سے بیشتر افراد نے جوازات کے ٹوئٹر پر دریافت کیاہے کہ کیا وہ بھی اس خصوصی رعایت کے زمرے میں شامل ہیں۔

جوازات کے ٹوئٹر پر اقاموں اور خروج وعودہ کی مدت میں دی جانے والی خصوصی رعایت کے حوالے سےہیں جن میں دریافت کیا گیا ’کن ممالک سے تعلق رکھنے والوں کے اقامے اور خروج وعودہ کی مدت میں توسیع ہوگی؟

جوازات کا کہنا تھا کہ وہ ممالک جہاں سے تعلق رکھنے والے اقامہ ہولڈرز سفری پابندی کے باعث مملکت نہیں آسکے ان میں پاکستان، انڈیا، مصر، ایتھوپیا، ویتنام، افغانستان، جنوبی افریقہ، ترکی، زمبابوے، نمبیا، موزمبیق، بوستوانا، لیسوتو، ایسواتینی اور لبنان شامل ہیں۔

واضح رہے سعودی وزارت داخلہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا تھا کہ سفری پابندی والے ممالک سے تعلق رکھنےوالے اقامہ ہولڈرز جو عائد پابندی کے باعث مملکت نہیں آسکے تھے ان کے اقامے اور خروج وعودہ کی مدت میں 31 جنوری 2022 تک مفت توسیع کی جائے گی توسیع پر مرحلہ وار عمل کیا جائے گا۔

خیال رہے وزارت داخلہ کے بیان کے حوالے سے لوگوں کا خیال تھا کہ یکم دسمبر سے جن 6 ممالک پرسفری پابندی ہٹانے کے احکامات جاری ہونے کے بعد اب ان ممالک میں موجود اقامہ ہولڈرز اس رعایت میں شامل نہیں ہوں گے۔

اس حوالے سے ان ممالک سے تعلق رکھنے والے بیشتر افراد نے جوازات کے ٹوئٹرپردریافت کیا ہے جس کے جواب میں جوازات کی جانب سے مذکورہ ممالک کے ناموں کی وضاحت کی ہے جن میں پاکستان سمیت وہ 6ممالک بھی شامل ہیں جہاں سے پابندی یکم دسمبر سے اٹھائی جارہی ہے۔

یاد رہے جب خصوصی رعایت کے احکامات صادر کیے گئے تھے اس وقت پاکستان سمیت مذکورہ 6 ممالک پر بھی پابندی عائد تھی جبکہ سفری پابندی کے خاتمے پر عمل درآمد کا پہلہ مرحلہ یکم اور دوسرے مرحلے کا آغاز 3 دسمبر 2021 سے کیاجائے گا۔

ایک شخص نے استفسارکیا ہے کہ پاکستان سے سعودی عرب آنا ہے اقامہ 3 جنوری کو ایکسپائرہوجائے گا جبکہ سیٹ نہیں مل رہی کیا خودکارطریقے سے توسیع ہوگی ؟

جوازات کا کہنا ہے کہ ایسے اقامہ ہولڈر تارکین جن کا تعلق سفری پابندی والے ممالک سے ہے ان کے اقاموں اور خروج وعودہ کی مدت میں 31 جنوری 2021 تک توسیع کردی جائے گی تاہم یہ توسیع مرحلہ وار ہوگی جو جوازات اور نیشنل ڈیٹا بیس سینٹر کے تعاون و اشتراک سے کی جارہی ہے۔

واضح رہے سعودی عرب کی جانب سے پاکستان سمیت 6 ممالک پرسفری پابندیاں یکم دسمبر سے ختم کی جارہی ہیں جس سے مذکورہ چھ ممالک سے آنے والے مسافروں خاص کر اقامہ ہولڈرز جو اپنے ملک میں گئے ہوئے ہیں کو فائدہ ہوگا اور وہ باسانی مملکت آسکیں گے۔

خیال رہے وہ افراد جن کے اقامے کی مدت سفر سے قبل ختم ہورہی ہے وہ اپنی باری کا انتظار کریں بصورت دیگر وہ اختیاری طریقہ استعمال کرتے ہوئے اپنے اقامے اور خروج وعودہ کی مدت میں توسیع کراسکتے ہیں تاہم اس کے لیے انہیں مقررہ فیس بھی ادا کرنا ہوگی جو سروس حاصل کرنے کے بعد ناقابل واپسی ہوگی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں