The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب: نیا قانون نافذ، خلاف ورزی پر بھاری جرمانے

ریاض: سعودی عرب میں ماحولیاتی تحفظ کے لیے نئے قوانین نانفذ کردیے گئے، خلاف ورزی پر بھاری جرمانے نافذ کردیے گئے۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی وزارت ماحولیات و پانی و زراعت نے سعودی عرب میں جنگلی حیاتیات کو نقصان پہنچانے کی روک تھام کا لائحہ عمل شروع کرنے کا اعلان کیا ہے۔

وزارت ماحولیات کا کہنا ہے کہ لائحہ عمل ماحولیاتی قانون کی دفعہ 48 کے مطابق تیار کیا گیا ہے اور یہ سعودی عرب میں موجود تمام افراد پر لاگو ہوگا۔

اس کا مقصد درخت کاٹنے، کوئلے، لکڑیاں درآمد کرنے اور ذخیرہ کرنے والی تمام سرگرمیوں سے ہے، اس کے تحت جنگلی حیاتیات کو نقصان پہنچانے سے روکنا اور درختوں کو کاٹنے پر پابندی مؤثر بنانا ہے۔

وزارت ماحولیات کا کہنا ہے کہ تحفظ ماحولیات قانون کی خلاف ورزی پر ایک ہزار ریال سے لے کر 2 ملین ریال تک کا جرمانہ مقرر کیا گیا ہے۔

خلاف ورزی دہرانے پر جرمانہ دگنا کردیا جائے گا، بغیر لائسنس سعودی عرب کے کسی بھی علاقے میں لکڑیاں جمع کرنا، ذخیرہ کرنا، فروخت کرنا اور منتقل کرنا قابل سزا جرم ہے۔

قوانین کے تحت اندرون ملک بغیر لائسنس لکڑیوں کا کاروبار نہیں کیا جاسکتا، بغیر لائسنس درآمدی کوئلے اور لکڑیاں ذخیرہ کرنے اور بیچنے پر بھی پابندی ہے۔ درختوں کو جلانا منع ہے اور محفوظ قومی جنگلات کے درخت کاٹنا جرم ہے۔

وزارت ماحولیات نے مزید کہا کہ اگر ایک برس کے دوران دوسری بار خلاف ورزی ریکارڈ پر آئی تو ایسی صورت میں 10 برس تک قید یا 30 ملین ریال تک کا جرمانہ ہوگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں