The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب میں بھی الیکٹرک کاریں دوڑتی نظر آئیں گی؟

سعودی ایکسپورٹ اتھارٹی کے بورڈ آف ڈائریکٹرز نے اعلان کیا ہے کہ مملکت نے الیکٹرک کاروں کی تیاری شروع کردی ہے۔

مقامی چینل کے مطابق کے سعودی بورڈ آف ڈائریکٹرز کے ایک رکن محمد الخریف نے بتایا ہے کہ ہم نے باضابطہ آٹوموبائل کی صنعت میں شروعات کردی ہیں کیونکہ یہ دوسری صنعتوں خاص طور پر الیکٹرک کاروں کی صنعت کے لیے پرکشش ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اس اقدام سے سعودی صنعت کو دنیا میں ایک مقام حاصل ہوگا، سعودی عرب پہلے ہی دنیا کے 176 ممالک کو ایکسپورٹ کرتی ہے اور سب سے زیادہ برآمد کی جانے والی مصنوعات پیٹروکیمیکل اور خوراک ہے۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ سعودی مصنوعات کی عالمی منڈیوں میں موجودگی اس مصنوعات پر بھروسے کی علامت ہے جب کہ مملکت جن ممالک کو برآمدات کرتی ہے ان میں گروپ آف ٹوئنٹی بھی شامل ہیں جبکہ چین، بھارت اور یورپ جیسے مختلف ممالک کی پیٹروکیمیکل صنعتیں، خوراک، میکنیکل اور برقی صنعتیں اس فہرست میں سرفہرست ہیں۔

دوسری جانب پی آئی ایف کی حمایت یافتہ کمپنی Lucid Motorsکے چیئرمین نے کہا ہے کہ کمپنی 2025 یا 2026 تک سعودی عرب میں مینوفیکچرنگ پلانٹ تعمیر کرنے کا ارادہ رکھتی ہے کیونکہ وہ الیکٹرک کاروں کی مانگ کو پورا کرنے کے لیے پیداوار کو بڑھانا چاہتی ہے۔

اینڈیور لیوریز نے بدھ کو ریاض میں کان کنی کانفرنس کے دوران بلومبرگ ٹیلی ویژن کو بتایا کہ اب جبکہ ہم امریکا میں کاروں کی کامیابی کے ساتھ پیداوار اور فروخت کررہے ہیں، ہماری توجہ یہاں کی اس فیکٹری کی طرف ہے۔ کیلیفورنیا میں قائم کمپنی جسے سعودی عرب کے پبلک انویسٹمنٹ فنڈ کی حمایت حاصل ہے گزشتہ ماہ مملکت میں وزارتوں کے ساتھ تفصیلات پر بات چیت کررہی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں