The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب: ملازمین کو برطرف کرنے پر نجی اداروں پر جرمانہ ہوگا

ریاض: سعودی حکام نے مملکت میں نجی اداروں کو پابند کیا ہے کہ وہ کرونا وائرس کی وبا کے دوران اپنے ملازمین کو برطرف نہیں کریں گے، ایسا کرنے والے اداروں پر ہزاروں ریال جرمانہ عائد کیا جائے گا۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی وزیر افرادی قوت و سماجی بہبود انجینیئر احمد الراجحی نے کرونا وائرس کی وبا سے متاثرہ نجی اداروں کے سعودی ملازمین کے لیے شاہی فرامین کی خلاف ورزیوں پر سزائیں مقرر کی ہیں۔

شاہی فرمان کے تحت طے کیا گیا ہے کہ متاثرہ نجی ادارے اپنے یہاں تعینات سعودی ملازمین کو وبا کے دوران برطرف نہیں کریں گے اور سرکاری خزانے سے ان کی تنخواہ ادا کی جائے گی۔

وزیر افرادی قوت نے طے کیا ہے کہ اگر کسی نجی ادارے نے سعودی ملازم کو سرکار کی جانب سے دیے جانے والے معاوضے کا دورانیہ ختم ہونے کے بعد برطرف کیا تو فی برطرف کارکن 50 ہزار ریال کا جرمانہ ہوگا۔

وزارت نے دوسری پابندی یہ لگائی ہے کہ اگر کسی نجی ادارے نے کسی ایسے سعودی ملازم کو جو شاہی سبسڈی پروگرام میں شامل نہ ہو، برطرف کر دیا تو فی برطرف سعودی ملازم ادارے پر 10 ہزار ریال جرمانہ ہوگا۔

وزارت نے تیسرا ضابطہ یہ مقرر کیا ہے کہ اگر کسی نجی کمپنی نے سرکاری خزانے سے ادا کی جانے والی تنخواہ کا دورانیہ ختم ہو جانے کے بعد سعودی ملازمین کا محنتانہ بحال نہ کیا تو ایسی صورت میں کمپنی پر فی سعودی ملازم 20 ہزار ریال کا جرمانہ ہوگا.

Comments

یہ بھی پڑھیں