The news is by your side.

Advertisement

سعودی اقامہ اور ویزا: غیرملکیوں کے بچوں سے متعلق اہم وضاحت جاری

ریاض: سعودی محکمہ پاسپورٹ وامیگریشن(جوازات) نے تارکین وطن کے بچوں کے حوالے سے اہم وضاحت جاری کی ہے۔

عرب میڈیا کی رپورٹ کے مطابق جوازات کے ٹوئٹر ہینڈل پر ایک غیرملکی نے سوال کیا کہ جوازات کے سسٹم میں بچوں کے فنگر پرنٹ کے لیے عمر کی انتہائی حد کیا ہے؟۔

سعودی محکمہ پاسپورٹ نے جواب دیا کہ تارکین کے بچوں کے لیے لازمی فنگر پرنٹ کی انتہائی حد 6 برس اور اس سے زائد ہے، جوازات کے مرکزی سسٹم میں اقاموں کے اجرا و تجدید اور خروج وعودہ کیلئے فنگر پرنٹ فیڈ کرنا ضروری ہوتا ہے۔

غیرملکیوں کے بچوں کے لیے لازمی عمر کی انتہائی حد چھے برس ہے۔ اس سے کم عمر کے بچوں کے فنگر پرنٹ لازمی کے زمرے میں نہیں آتے، لیکن والدین چاہیں تو جمع کراسکتے ہیں۔

خیال رہے کہ مملکت میں رہائشی قانون کے تحت مقامی شہریوں اور مقیم غیر ملکیوں کا ڈیٹا محکمہ پاسپورٹ ’جوازات‘ کے مرکزی سسٹم میں فیڈ کرنا ضروری ہے۔

اسی طرح تارکین وطن کے بچوں کا بھی ڈیٹا سسٹم میں فیڈ کیا جاتا ہے، اس دوران فنگر پرنٹ درکار ہوتے ہیں۔

واضح رہے کہ ڈیٹا جمع کرنے کے لیے تارکین اور شہریوں کی آنکھوں کا عکس اور انگلیوں کے نشانات کے ذریعے شناخت کے عمل کو محفوظ کیا جاتا ہے، سالانہ بنیاد پر اقامے کی تجدید کے لیے بھی یہ لازمی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں