The news is by your side.

Advertisement

مسلسل تیسرا عالمی مقابلہ جیتنے والے سعودی سائنس دان سے ملیے

ریاض: مکہ مکرمہ سے تعلق رکھنے والے ایک سعودی لڑکے نے مسلسل 3 سال سے عالمی سطح پر ذہنی صلاحیت کے مقابلے میں پہلے نمبر پر آنے کا ریکارڈ برقرار رکھا ہے۔

تفصیلات کے مطابق 15 سالہ سعودی لڑکے عماد العمودی نے روبوٹ ٹیکنالوجی میں مسلسل تیسرا عالمی مقابلہ جیت لیا ہے، عماد العمودی نے 2018 اور 2019 کے دوران ملائیشیا میں منعقد ہونے والے ذہنی حساب کے مقابلوں میں بھی پہلی پوزیشن حاصل کی تھی۔

گزشتہ برس بھی کرونا کے دنوں میں گھر میں اپنے وقت کا بہترین استعمال کرتے ہوئے اس نے ایک خود کار روبوٹ ڈیوائس بنا لی ہے۔

یہ ایک روبوٹ ہے جو سبزیاں اور دیگر کھانے کی اشیا کو کاٹنے کا کام آسان بناتا ہے، یہ ایجاد عالمی مقابلے میں پیش کی گئی تو اس نے ایک بار پھر پہلی پوزیشن حاصل کر لی۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عماد العمودی نے بتایا کہ اس نے گزشتہ برس اپنے بھائی معاذ کے ساتھ جنوبی کوریا میں ہونے والے ایک بین الاقوامی مقابلے میں حصہ لیا، جس میں امیدواروں کو تین گروپس میں تقسیم کیا گیا تھا، ایک گروپ 12، دوسرا 13 اور تیسرا گروپ اس سے زائد عمر کے بچوں کے لیے تھا۔

عماد کا کہنا تھا کہ انھوں نے گھر میں رہتے ہوئے ایک ربورٹ تیار کیا جو اپنا کام کرنے میں اعلیٰ درجے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

عماد نے مزید کہا کہ میں واحد عرب طالب علم ہوں جس نے معیار اور انتہائی خوب صورت ڈیزائن کی بنا پر اس مقابلے میں اپنا نام آنر لسٹ ‘بی’ میں رکھا ہے۔

واضح رہے کہ اس مقابلے میں جاپان اور چین جیسے ممالک کے انتہائی با صلاحیت ایسے طلبہ بھی تھے جن کی عمریں 20 سال کے لگ بھگ تھیں، روبوٹ ٹیکنالوجی میں ان ممالک کے طلبہ کو پیچھے چھوڑنا ایک بڑا اعزاز ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں