سعودی عرب اور اسپین کے درمیان اہم معاہدہ، جنگی بحری جہاز تیار کیے جائیں گے
The news is by your side.

Advertisement

سعودی عرب اور اسپین کے درمیان اہم معاہدہ، جنگی بحری جہاز تیار کیے جائیں گے

ریاض: سعودی عرب اور اسپین کے درمیان اہم معاہدہ طے پاگیا، دونوں ممالک مشترکہ طور پر جنگی بحری کشتیاں تیار کریں گے۔

تفصیلات کے مطابق سعودی عرب اور اسپین کے درمیان معاہدہ طے پایا ہے جس کے تحت دونوں ممالک مل کر پانچ جنگی جہاز تیار کریں گے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق اس معاہدے سے متعلق ایک تقریب کا انعقاد سعودی دارالحکومت ریاض میں کیا گیا جہاں اسپین کے اعلیٰ عہدیداروں نے شرکت کی۔

ترکی میں سعودی قونسل خانے میں صحافی جمال خاشقجی کے قتل کے بعد سعودی عرب کا کسی دوسرے ملک سے یہ پہلا دفاعی معاہدہ ہے۔

یمن جنگ: اسپین نے سعودی عرب کو بموں کی ترسیل روک دی

دوسری جانب یمن میں جاری خانہ جنگی کی وجہ سے اسپین کو پہلے ہی سعودی عرب کو ہتھیار فراہم کرنے پر شدید تنقید کا سامنا ہے۔

خیال رہے کہ رواں سال ستمبر میں سعودی عسکری اتحاد کی جانب سے یمن میں حملوں کے پیش نظر اسپین نے سعودی عرب کو بموں کی فروخت روک دی تھی۔

اسپین نے بموں کی فراہمی اس خدشے کے تحت روکی تھی کہ ریاض حکومت انہیں یمن جنگ میں استعمال کرے گی۔

یاد رہے کہ سابق ہسپانوی حکومت نے سن 2015 میں سعودی عرب کو 400 لیزر گائیڈڈ بموں کی فروخت کا معاہدہ کیا تھا جس کے تحت سعودی عرب کو بموں کی ترسیل کی جاتی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں