The news is by your side.

Advertisement

سعودی یونیورسٹی کے عہدیدار کرپشن میں ملوث، عدالت نے سزا سنادی

ریاض: مکہ مکرمہ میں ایک یونیورسٹی کے 6 عہدیداروں کو بدعنوان ثابت ہوجانے پر قید بامشقت اور جرمانے کی سزائیں سنائی گئی ہیں۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق یونیورسٹی کے 6 عہدیداروں کو ٹھیکوں میں گھپلے بازی میں ملوث پایا گیا، مذکورہ عہدیداران میں کچھ شعبوں کے ڈین بھی شامل ہیں۔

تحقیقات سے پتہ چلا کہ یونیورسٹی کے ان عہدیداروں نے اپنے عہدے سے ناجائز فائدہ اٹھایا۔

مذکورہ افسران نے ایک کمپنی کو جان بوجھ کر ٹھیکہ نہیں دیا اور دوسری کمپنی کو جس نے زیادہ بڑی رقم کا ٹینڈر بھرا تھا ٹھیکہ دے دیا، اور سرکاری خزانے پر 1 کروڑ 40 لاکھ ریال سے زیادہ کا بوجھ ڈالا۔

علاوہ ازیں ٹھیکہ ایسی کمپنیوں کو دیا گیا جو تعلیمی عملے کے ساتھ گٹھ جوڑ کیے ہوئے تھے۔

عہدیداران پر سرکاری خزانہ لوٹنے سمیت مختلف الزامات لگائے گئے جو ثابت ہوگئے ہیں جس کے بعد فوجداری عدالت نے 4 ملزمان کو 1، 1 لاکھ ریال جرمانے کی سزا دی۔

بقیہ 2 کو سرکاری دستاویزات میں جعلسازی کا مجرم بھی قرار دیا گیا، ان پر 2 لاکھ ریال جرمانہ لگایا گیا۔ عدالت نے 2 ملزمان کو انسداد رشوت قانون کی خلاف ورزی پر 1 برس قید کی سزا بھی سنائی۔

مذکورہ ملزمان نے فوجداری عدالت کے فیصلے پر اعتراض کیا ہے، انہوں نے عدالتی فیصلہ کالعدم قرار دینے اور خود کو بری الذمہ ثابت کرنے کے لیے مکہ مکرمہ اپیل کورٹ سے رجوع کر لیا ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں