The news is by your side.

Advertisement

سعودی ویکسین کی تیاری کہاں تک پہنچی؟

ریاض: سعودی ماہرین طب کا کہنا ہے کہ سعودی عرب میں تیار کردہ کرونا وائرس ویکسین کے ای کلینکل ٹرائلز جلد شروع کردیے جائیں گے۔

سعودی ویب سائٹ کے مطابق سعودی عرب میں امام عبد الرحمٰن بن فیصل یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر عبداللہ الربیش کا کہنا ہے کہ پہلی سعودی ویکسین کے ای کلینکل ٹرائلز جلد شروع کیے جائیں گے۔

یہ ویکسین یونیورسٹی کے اسکالرز نے تیار کی ہے، وائس چانسلر کا کہنا ہے کہ وزیر تعلیم ڈاکٹر حمد آل الشیخ ای کلینکل ٹرائلز کی راہ میں حائل رکاوٹیں دور کروانے کے لیے کوشاں ہیں۔

وائس چانسلر کے مطابق کوبرا اور آئیکون نامی کمپنیوں کے ساتھ ای کلینکل ٹرائلز کے دوسرے مرحلے کے معاہدے پر دستخط کی تیاریاں ہو رہی ہیں اور بہت جلد یہ کام انجام پا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ سعودی کابینہ کی جانب سے وزارت تعلیم اور جامعات کی تعریف نے ثابت کردیا کہ ہماری قیادت سعودی یونیورسٹیوں اور سائنس ریسرچ سینٹر اینڈ انسٹی ٹیوٹ کی کارکردگی کو قدر و منزلت کی نگاہ سے دیکھ رہی ہے۔

خیال رہے کہ امام عبد الرحمٰن یونیورسٹی میں میڈیکل کنسلٹنسی اینڈ ریسرچ انسٹی ٹیوٹ کی ایک ٹیم کرونا وائرس ویکسین تک رسائی میں کامیابی حاصل کرچکی ہے تاہم ابھی تک اس ویکسین کے ای کلینکل ٹرائلز نہیں ہوئے ہیں۔

سعودی ماہرین کے مطابق یہ ڈی این اے ٹیکنالوجی کی بنیاد پر تیار کی گئی ہے، اس کے لیے شدید ٹھنڈک کی ضرورت نہیں ہوتی اور اس کا فائدہ یہ ہوگا کہ اسے ایک جگہ سے دوسری جگہ باآسانی لے جایا جاسکے گا۔

سعودی ویکسین کو 4 سینٹی گریڈ درجہ حرارت میں محفوظ کیا جاسکے گا اور مکمل 1 برس تک ذخیرہ کرنا ممکن ہوگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں