The news is by your side.

Advertisement

سعودی خواتین کو فٹبال کھیلنے کی اجازت مل گئی

ریاض: سعودی عرب نے عالمی مقابلوں میں حصہ لینے سمیت ملک میں کھیلوں کو فروغ دینے کے لیے خواتین کی فٹبال ٹیم تشکیل دینے کا عمل شروع کردیا۔

فرانسیسی خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب نے پہلے مرحلے میں خواتین فٹبالرز پر مبنی 16 ٹیمیں تشکیل دیں ہیں، جو مقامی سطح پر ہونے والے ایونٹ ’ویمنز سوکر لیگ‘ میں حصہ لیں گی۔ یہ ٹیمیں جدہ، دمام میں ہونے والے ایونٹ میں حصہ لیں گی۔

سعودی عرب کی خواتین کو فٹ بالر بننے کی اجازت ملنے سے بہت سی خواتین نے خوشی کا اظہار کیا اور وہ بھرپور جوش و جذبے کے ساتھ اس کی تربیت بھی حاصل کررہی ہیں۔

ان ہی میں ایک خاتون کھلاڑی کا نام فراح جعفری ہے، جنہوں نے امید ظاہر کی کہ وہ فٹبال ورلڈکپ میں اب اپنے ملک کی نمائندگی کریں گی۔

مزید پڑھیں: سعودی خواتین کے غیرملکی شوہروں سے متعلق نیا نظام متعارف، بڑی خوشخبری

انہوں نے بتایا کہ ’اس سفر میں مجھے بہت سے مسائل اور مشکلات کا سامنا کرنا پڑا، پابندی کی وجہ سے گھر اور رشتے داروں نے فٹبال کی مخالفت کی جبکہ معاشرہ بھی قبول نہیں کررہا تھا]‘۔

فراح نے بتایا کہ ان سارے مسائل اور مشکلات کے باوجود مجھے دوستوں اور اہل خانہ کی جانب سے حوصلہ دیا گیا، جس سے میں یہاں تک پہنچ سکیں ہوں۔

سعودی عرب کی وزارت برائے کھیل کے مطابق فراح جعفری اُن تیس کھلاڑیوں میں شامل ہیں، جنہیں ورلڈکپ کے لیے منتخب کیا گیا ہے۔

حکام نے ابھی تک سعودی خواتین کے لیے کھیلوں کے لباس پر کوئی پابندی عائد نہیں کی ہے جبکہ ماضی میں ان پر سعودی عرب کی مذہبی پولیس کی طرف سے سخت  ’یونیفارم ‘ نافذ تھا۔

یہ بھی پڑھیں: قانون میں‌ ترمیم، سعودی خواتین کو اکیلے زندگی گزارنے کی اجازت

یاد رہے کہ سعودی عرب وژن 2030 پر عمل پیرا ہے، جس کے تحت گزشتہ چند سالوں سے خواتین پر عائد پابندیاں ختم کی جارہی ہیں اور اس اجازت کو بھی اُسی منصوبے کا حصہ قرار دیا گیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں