The news is by your side.

Advertisement

پاکستانی شہری کے قتل کا اعتراف، سعودی شہریوں سمیت 5 کے سر قلم

ریاض: سعودی حکومت نے پاکستانی شہری کے قتل میں ملوث 5 افراد کا سرقلم کردیا جن میں سے 2 سعودی جبکہ 3 افریقی شہری تھے۔

عرب میڈیا کے مطابق سعودی عرب کے شہر جدہ میں پاکستانی شہری کا گودام تھا جہاں مذکورہ افراد جن میں دو مقامی نوجوان بھی شامل تھے انہوں نے ڈکیتی کی۔

ڈکیتی کے دوران مسلح افراد نے گودام میں تعینات سیکیورٹی گارڈ سے موبائل و اسلحہ چھیننا چاہا مگر اُس نے مزاحمت کی جس کے بعد مذکورہ افراد نے فائرنگ کر کے مالک اور محافظ کو قتل کردیا۔

پولیس نے واقعے کی تحقیقات شروع کی تو معلوم ہوا کہ واردات میں دو سعودی جبکہ 3 افریقی شہری شامل تھے، تفتیشی حکام نے  پانچوں افراد کو گرفتار کیا تو سب نے قتل کا اعتراف کیا۔

مزید پڑھیں: سعودی عرب: باپ کو آگ لگا کر قتل کرنے والے بیٹے کا سرقلم

مذکورہ افراد کو عدالت میں پیش کیا گیا جہاں انہوں نے اپنے جرم کا اعتراف کیا جس کے بعد جج نے پانچوں کا سرقلم کرنے کی سزا سنائی، عدالتی حکم پر دو سعودی جبکہ تین افریقی شہریوں کا بدھ کے روز جدہ میں سرقلم کیا گیا۔

وزارت داخلہ کی جانب سے گودام پر پیش آنے والے واقعے کی تفصیلات اور مقتول کا نام جاری نہیں کیا گیا اور نہ ہی سرقلم ہونے والے افراد کے نام ظاہر کیے گئے۔

خیال رہے کہ گزشتہ برس جولائی کے مہینے میں سعودی عدالت نے 6 پاکستانیوں پر انسانی اسمگلنگ کا الزام ثابت ہونے پر سزا سنائی تھی علاوہ ازیں پانچ سعودی باشندوں کے بھی سر قلم کیے گئے تھے۔

یہ بھی پڑھیں: سعودی عرب: ماں بیٹے سے زیادتی اور قتل، چار پاکستانیوں کا سرقلم

یاد رہے کہ سعودی عرب میں سر قلم کیے گئے افراد کی تعداد دنیا میں سب سے زیادہ ہے جن افراد کے سرقلم کیے جاتے ہیں ان میں منشیات کی اسمگلنگ، دہشت گردی، قتل، زیادتی، مسلح ڈکیتی کے جرائم شامل ہیں۔

برطانیہ سے تعلق رکھنے والی انسانی حقوق کی عالمی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل کے اعدادو شمار کے مطابق گزشتہ برس سعودی عرب میں ان جرائم پر 153 افراد کو سر قلم کی سزا دی گئی تھی۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں