The news is by your side.

Advertisement

سپریم کورٹ‌ نے نہال ہاشمی کی تحریری معافی قبول کر لی

‌اسلام آباد: سپریم کورٹ آف پاکستان نے نہال ہاشمی کی تحریری معافی قبول کرتے ہوئے عدالتی کارروائی ختم کر دی.

تفصیلات کے مطابق آج چیف جسٹس کی سر براہی میں تین رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی، دوران سماعت چیف جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا، آپ غیرمشروط معافی لکھ کردیں، آپ کی سزا آپ کے بچوں کو نہیں دینا چاہتا، معافی سے مطمئن ہوئے، تو نوٹس واپس لے لیں گے.

خود کو معززعدالت کے رحم وکرم پر چھوڑتا ہوں، آئندہ معزز عدالت کو شکایت کا موقع نہیں دوں گا

نہال ہاشمی

مسلم لیگ کے رہنما نے اپنا معافی نامہ جمع کروایا، جس میں‌ انھوں نے موقف اختیار کیا کہ میں‌ اپنے کیے پر نادم ہوں، آئندہ ایسی گفتگو نہیں کروں گا، اس عمل سے مجھے شرمندگی ہوئی ہے، آئندہ خیال رکھوں گا.

نہال ہاشمی نے معافی نامے میں‌ کہا کہ آئندہ کسی جگہ ایسے الفاظ استعمال نہیں کروں گا، جس سے توہین عدالت ہو، اپنے کیے پر شرمندہ ہوں.عدالت سے غیرمشروط معافی مانگتا ہوں۔

انھوں نے اپنے تحریری معافی نامے میں‌ کہا کہ میں نہال ہاشمی ایڈووکیٹ اپنے کیے پرنادم ہوں، عدالت اور وکلابرادری کا بے حد احترام کرتا ہوں، خود کو معززعدالت کے رحم وکرم پر چھوڑتا ہوں، آئندہ معزز عدالت کو شکایت کا موقع نہیں دوں گا۔

سپریم کورٹ نے نہال ہاشمی کی معافی قبول کرتے ہوئے ان کے خلاف توہین عدالت کا کیس ختم کردیا.

یادر رہے کہ نہال ہاشمی کی توہین آمیز تقریر کے بعد انہیں توہین عدالت کے جرم میں ایک ماہ کی سزا سنادی گئی تھی، جس کی وجہ سے وہ سینیٹر شپ سے محروم ہوگئے تھے۔ 

البتہ رہائی کے بعد انہوں نے ایک بار پھر سخت زبان استعمال کرتے ہوئے عدلیہ مخالف الفاظ کہے تھے جس کا چیف جسٹس نے پھر نوٹس لیتے ہوئے انہیں عدالت طلب کرلیا تھا۔


عدالت کو گالی دینے کی جرات کیسے ہوئی؟ چیف جسٹس نے نہال ہاشمی کو جھاڑ پلا دی


Comments

comments

یہ بھی پڑھیں