The news is by your side.

Advertisement

فیصل واوڈا نااہلی کیس : نثار کھوڑو کی کامیابی کا نوٹی فکیشن روکنے کی استدعا مسترد

اسلام آباد : سپریم کورٹ نے فیصل واوڈا نااہلی کیس میں نثار کھوڑو کی کامیابی کا نوٹی فکیشن روکنے کی استدعا مسترد کردی اور الیکشن کمیشن کو جواب جمع کرانے کے لیے وقت دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں فیصل واوڈانااہلی کیس کی سماعت ہوئی ، چیف جسٹس کی سربراہی میں 3رکنی بنچ نےکیس کی سماعت کی۔

وکیل الیکشن کمیشن نے بتایا کہ فیصل واوڈا کی خالی نشست پر 9 مارچ کو الیکشن ہوا، سیٹ پر جیتنے والے امیدوار کا نوٹی فکیشن ابھی جاری نہیں ہوا، کیس کانوٹس کل موصول ہوا جواب کیلئےوقت درکار ہے۔

وکیل فیصل واوڈا وسیم سجاد کا کہنا تھا کہ جیتنےوالےامیدوارکانوٹی فکیشن معطل کیا جائے، سپریم کورٹ کے حکم امتناع کی وجہ سے معاملات زیر التوا ہیں، جس پرچیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ عدالت نے کسی نوٹی فکیشن کو نہیں روکا۔

چیف جسٹس نے مزید کہا کہ فیصل واوڈا کی خالی نشست پر امیدوار کی جیت عارضی ہے، فیصل واوڈا کیس ہار جاتے ہیں تو امیدوار کی لاٹری نکل جائے گی ، غلط بیان حلفی ،اسکے بعد کنڈکٹ کےنتائج تو ہوں گے۔

جسٹس عطا بندیال کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن کے پاس الیکشن ایکٹ کے سیکشن 9 کے تحت اختیارات ہیں، الیکشن کمیشن نےجس شق کےتحت نااہلی کی اس کودیکھیں گے، کیس کو لٹکانا نہیں چاہتے نثار کھوڑو کو بھی فریق بنانا چاہتےہیں توبنالیں۔

وکیل وسیم سجاد نے کہا نثار کھوڑو خود کیس میں فریق بننے کی درخواست کریں، جس پر چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ ان کا انتظار کیا تو کیس تین چار ہفتے مزید لٹک جائے گا۔

سپریم کورٹ نے نثار کھوڑو کی کامیابی کا نوٹی فکیشن روکنےکی استدعا مسترد کرتے ہوئے الیکشن کمیشن کو جواب جمع کرانے کے لیے وقت دےدیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں