The news is by your side.

Advertisement

سپریم کورٹ نے سندھ میں موٹرسائیکل رکشہ چلانے کی اجازت دیدی

اسلام آباد : سپریم کورٹ نےسندھ میں موٹرسائیکل رکشہ چلانے کی اجازت دیدی۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں چنگچی رکشہ پر پابندی سے متعلق کیس کی سماعت جسٹس گلزار کیانی کی سربراہی میں 3رکنی بینچ نےکی، سپریم کورٹ نے آل سندھ چنگچی رکشہ یونین کی درخواست منظور کرتے ہوئے سندھ میں موٹرسائیکل رکشہ چلانے کی اجازت دیدی، جس کے بعد 10ہزار رجسٹرڈ رکشہ کراچی سمیت سندھ بھر میں چلائے جاسکیں گے۔

عدالت کا کہنا ہے کہ ان رجسٹر ، خود ساختہ اور معیار پر پورے نہ اترنے والے رکشوں کی اجازت نہیں ہوگی۔

جسٹس گلزار احمد نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ کراچی میں 1950 کی بسیں چل رہی ہیں جبکہ پورے ملک میں چنگچی رکشے پھیلے ہوئے ہیں، یہ خطرناک رکشے ہیں، جو مڑنے پر الٹ جاتے ہیں۔ حکومت میٹرو، گرین بس اورنج لائن ٹرانسپورٹ چلارہی ہے جبکہ چنگچی رکشوں کے نظام کو دیکھنے والا کوئی نہیں۔

جسٹس گلزار نےمزید  کہا کہ حکومت پہلے تو مسئلے پر سوئی رہتی ہے لیکن جب لوگوں کا روزگار لگ جائے تو اسے ہوش آتا ہے۔ اب حکومت کا کام ہے کہ مسئلہ بھی حل کرے اور لوگوں کا روزگار بھی بحال رکھے۔


مزید پڑھیں : سپریم کورٹ کا چنگچی رکشے 3ماہ میں رجسٹرکرنیکا حکم


یاد رہے اس سے قبل سپریم کورٹ نے تین ماہ میں چنگچی رکشے رجسٹرڈ کرانے کا حکم دیتے ہوئے رکشوں کو شہر کی سڑکوں پر لا نے کی مشروط اجازت دی تھی ، سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے تمام رکشوں کی انسپکشن اور تین ماہ میں رجسٹرکرنے کا حکم دیا تھا اور کہا تھا کہ چنگ چی رکشوں کو رجسٹر ہونے تک سڑکوں پر نہ لایا جائے‌ اور ساتھ ہی ڈرائیوروں پر ٹیسٹ کے بعد لائسنس کے اجرا کی شرط لازم قرار دی گئی تھی ۔

یاد رہے کہ صوبائی حکومت نے چنگچی رکشہ غیر محفوظ ہو نے کی بنیادپر پابندی عائد کی تھی۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں