دھمکی آمیزتقریر کیس، سپریم کورٹ کی نہال ہاشمی کو جواب جمع کرانے کیلئے آخری مہلت -
The news is by your side.

Advertisement

دھمکی آمیزتقریر کیس، سپریم کورٹ کی نہال ہاشمی کو جواب جمع کرانے کیلئے آخری مہلت

اسلام آباد : دھمکی آمیز تقریر کیس میں سپریم کورٹ نے نہال ہاشمی کو جواب جمع کرانے کیلئے آخری مہلت دیدی ، عدالت کا کہنا تھا کہ انصاف کے تقاضوں کو مدنظر رکھتے ہوئے آخری موقع دے رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں دھمکی آمیز بیان پر نہال ہاشمی کے خلاف توہین عدالت کے از خود نوٹس کی سماعت جسٹس اعجازافضل کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی، نہال ہاشمی اپنے وکیل حشمت حبیب کے ساتھ عدالت میں حاضر ہوئے۔

سماعت میں وکیل نے سپریم کورٹ سے 28 مئی کو نہال ہاشمی کی جانب سے کی جانے والی تقریر کا متن مانگ لیا، جس پر جسٹس اعجاز الالحسن نے کہا کہ لگتا ہے آپ عدالت کے ساتھ کھیل رہے ہیں، ساری دنیا میں ٹرانسکرپٹ پھر رہا ہے، آپکو نہیں مل رہا، گوگل پر سرچ کریں سب مل جائے گا۔

اس موقع پر جسٹس عظمت نے کہا کہ پہلی سماعت پر آپ نے تقریر کا متن کیوں نہیں مانگا؟ جس پر نہال ہاشمی کے وکیل حشمت حبیب کا کہنا تھا کہ  دوسری سماعت پر نہال ہاشمی نے وکیل کرنے کی استدعا کی جبکہ اٹارنی جنرل کی جانب سے تقریر کا متن عدالت میں جمع کرایا گیا تھا۔ میرے پاس تقریر کا متن نہیں ۔ متن کو دیکھ کر جواب داخل کرائیں گے۔


مزید پڑھیں : متنازع تقریر پر نہال ہاشمی کومسلم لیگ ن سے نکال دیا گیا


وکیل کے مزید مہلت مانگنے پر عدالت برہم ہوگئی اور کہا آپ کے پاس اپنا دیا ہوا بیان بھی نہیں ہے، آپ کو یہ بھی نہیں پتہ آپ نے کیا کہا ہے؟ نہال ہاشمی کو سوچ سمجھ کر جواب دینے کا موقع دیا تھا، دوسری سماعت میں وکیل کیلئے وقت مانگا گیا اور اب تیسری سماعت میں ٹرانسکرپٹ کیلئے درخواست دے دی گئی ہے، عجیب بات ہے نہال ہاشمی کو اپنا کہا یاد نہیں۔

جس پر نہال ہاشمی کے وکیل حشمت حبیب نے کہا کہ ہمیں یاد ہے وہ زرا زرا، نہال ہاشمی اپنی تقریر سے انکار نہیں کررہے، عدالت کی ہدایت پراٹارنی جنرل نےنہال ہاشمی کوٹرانسکرپٹ کی کاپی فراہم کردی۔

نہال ہاشمی کے وکیل کی استدعا پر عدالت نے کہا کہ  انصاف کے تقاضے پورا کرنے لئے نہال ہاشمی کو آخری موقع دے رہے ہیں، اگلے جمعے تک اپناجواب داخل کرائیں ۔

عدالت عظمی نے نہال ہاشمی کو دس دن کی مہلت دیتے ہوئے سماعت 23 جون تک ملتوی کردی۔


مزید پڑھیں : نہال ہاشمی کی پانامہ کیس کی تحقیقات کرنیوالی جے آئی ٹی کو کھلے عام سنگین دھمکیاں


واضح رہے کہ ایک تقریب میں تقریر کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے رہنما سینیٹر نہال ہاشمی نےکہا تھا کہ احتساب کرنے والوں ہم تمہارا یوم حساب بنادیں گے، تم جس کااحتساب کر رہے ہو وہ نوازشریف کا بیٹاہے، ہم نے چھوڑنا نہیں تم کو آج حاضر سروس ہو کل ریٹائر ہوجاؤ گے، ہم تمہارے بچوں اور خاندان کے لیے پاکستان کی زمین تنگ کردیں گے۔

چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے جے آئی ٹی سے متعلق نہال ہاشمی کے بیان کا نوٹس لے کر ان کا معاملہ پاناما عمل درآمد بینچ کو بھیج دیا تھا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں