The news is by your side.

Advertisement

دہری شہریت کیس ،5 نو منتخب سینیٹرز کی قسمت کا فیصلہ آج ہوگا

اسلام آباد : سپریم کورٹ میں دہری شہریت کیس میں پانچ نو منتخب سینیٹرز کی قسمت کا فیصلہ آج ہوگا، چوہدری سرور اور سعدیہ عباسی سمیت پانچ نو منتخب سینیٹرز کو عدالت نے عارضی ریلیف دے کر کامیابی کا نوٹی فیکیشن جاری کرنے کی اجازت دی تھی۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں دہری شہریت کیس کی سماعت آج ہوگی، عدالت پی ٹی آئی کے چوہدری سرور، نون لیگ کے تین سینیٹر ، وزیراعظم کی بہن سعدیہ عباسی، نزہت صادق اور ہارون اختر جبکہ بلوچستان سے منتخب آزاد سینیٹر کہدہ بابر کی قسمت کا فیصلہ کرے گی۔

گذشتہ دس مارچ کی سماعت پر نو منتخب سینیٹرز کو عارضی ریلیف ملا تھا، سپریم کورٹ نے الیکشن کمیشن کو عارضی نوٹی فکیشن جاری کرنے کا حکم دیا تھا اور اور کیس کی سماعت کے لیے سات رکنی بنچ تشکیل دیدیا تھا۔

چیف جسٹس ثاقب نثار نے چوہدری سرور سے کہا تھا کہ بیان حلفی دیں آپ دوبارہ برطانوی شہریت بحال نہیں کرائیں گے، دوبارہ غیرملکی شہریت بحال کرائی تو نااہلی بنتی ہے۔


مزید پڑھیں : سپریم کورٹ کا دوہری شہریت رکھنے والے 5 نومنتخب سینٹرز کا نوٹیفیکیشن جاری کرنے کا حکم


جسٹس اعجازالاحسن نے ریمارکس دیئے تھے کہ پانچ سینیٹرز کو ووٹ ڈالنے کی اجازت دی، بعد میں نااہل قرار پائے تو چیئرمین سینیٹ کے الیکشن کا کیا بنے گا؟ جس پر چیف جسٹس نے کہا تھا پیچیدہ آئینی نقطہ ہے، حتمی فیصلہ لارجر بنچ کرے گا۔

یاد رہے کہ 5 مارچ چیف جسٹس میاں ثاقب نثار نے سینیٹ کے چار نو منتخب ارکان کی کامیابی کا نوٹی فکیشن نہ جاری کرنے کا حکم دیا تھا اور کہا تھا کہ کیس کے فیصلے تک الیکشن کمیشن نوٹیفکیشن جاری نہ کرے۔

انہوں نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا تھا کہ سینیٹرز کو پہلے مطمئن کرنا ہوگا کہ وہ دہری شہریت ترک کر چکے ہیں۔

خیال رہے کہ نومنتخب سینیٹرز میں سے چوہدری سرور کا تعلق پاکستان تحریک انصاف جبکہ ہارون اختر، نزہت صادق اور سعدیہ عباسی کا تعلق مسلم لیگ (ن) سے ہے اور چاروں افراد پنجاب سے سینیٹرز منتخب ہوئے ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں۔ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں