جے آئی ٹی کو دھمکیاں، نہال ہاشمی کی آج پھر سپریم کورٹ میں پیشی -
The news is by your side.

Advertisement

جے آئی ٹی کو دھمکیاں، نہال ہاشمی کی آج پھر سپریم کورٹ میں پیشی

اسلام آباد : جے آئی ٹی کو دھمکیاں دینے والے مسلم لیگ نون کے مستعفی سینیٹر نہال ہاشمی آج دوبارہ سپریم کورٹ میں پیش ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق دھمکی آمیز بیان پر نہال ہاشمی کے خلاف توہین عدالت کے از خود نوٹس کی سماعت جسٹس اعجازافضل کی سربراہی میں تین رکنی بینچ کرے گا، نہال ہاشمی آج سپریم کورٹ کے اظہار وجوہ نوٹس کا جواب دیں گے۔

گزشتہ سماعت میں سپریم کورٹ نے توہین عدالت ازخود نوٹس میں نہال ہاشمی کو شوکاز نوٹس جاری کیا تھا اور ہدایت کی تھی کہ وہ تحریری جواب میں اپنی اشتعال انگیز تقریر کی وضاحت کریں۔

پہلی پیشی میں نہال ہاشمی نے عدالت سے معافی مانگی تھی جو مسترد کر دی گئی تھی، نہال ہاشمی کا موقف تھا انہوں نے مائنڈ سیٹ کی بات کی ہے۔

سپریم کورٹ کے تین رکنی بینچ کے سربراہ جسٹس اعجاز افضل نے نہال ہاشمی کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی کے لیے اٹارنی جنرل کو پراسیکیوٹر مقرر کیا تھا۔


مزید پڑھیں : متنازع تقریرازخود نوٹس کیس، نہال ہاشمی کو 5 جون کو جواب جمع کرانے کا حکم


یاد رہے کہ سپریم کورٹ کی جانب سے نہال ہاشمی کی اس تقریر پر از خود نوٹس لیتے ہوئَے انہیں طلب کیا گیا تھا، اس سے قبل پیشی میں نہال ہاشمی نے اپنی تقریر سے متعلق بیان دیا تھا، جس کے بعد کیس کی سماعت 5 جون تک ملتوی کر دی گئی تھی۔

واضح رہے سینیٹر نہال ہاشمی کا متنازع اور دھمکی آمیز ویڈیو تقریر منظر عام پر آئی تھی، جس میں انہوں نے پامانا کیس میں تحقیقات کرنے والی جے آئی ٹی کو زمین تنگ کرنے کی دھمکی دی تھی، جس کا نوٹس لیتے ہوئے وزیراعظم نے پارٹی رکنیت معطل کرتے ہوئے سینیٹر شپ سے استعفیٰ لے لیا تھا۔


اگرآپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اوراگرآپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پرشیئرکریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں