The news is by your side.

Advertisement

ڈینیل پرل کیس: سندھ حکومت کی ملزمان کی رہائی روکنے کے حکم امتناع میں توسیع کی استدعا مسترد

اسلام آباد : سپریم کورٹ نے ڈینیل پرل کیس میں سندھ حکومت کی ملزمان کی رہائی روکنے کے حکم امتناع میں توسیع کی استدعا مسترد کردی جبکہ پراسیکیوٹر جنرل سندھ نے کیس کی تیاری کیلئے وقت مانگ لیا۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں ڈینیل پرل کیس کی سماعت ہوئی، عدالت نے سندھ حکومت کی ملزمان کی رہائی روکنے کے حکم امتناع میں توسیع کی استدعا مسترد کردی۔

جسٹس قاضی امین نے ریمارکس دیے کہ سندھ حکومت ملزمان کو جیل میں کیوں رکھنا چاہتی ہے؟ عدالت نے ملزمان کو بری کردیا ہے، بریت کافیصلہ غیرمعمولی اختیار سے کالعدم ہوسکتا ہے۔

جسٹس قاضی امین نے مزید ریمارکس دیے کہ ہم نے ریکارڈ دیکھ کر فیصلہ کرنا ہے، مختاراں مائی کیس میں ملزمان کی بریت کا فیصلہ معطل کیا تھا، مختاراں مائی کے ملزمان بھی جیل میں رہنے کے بعد بری ہوئے۔

جسٹس مشیر عالم نے ریمارکس دیے کہ سندھ حکومت پہلے ہی تین ماہ کیلئے ملزمان کو حراست میں رکھ چکی ہے، پراسیکیوٹر جنرل سندھ نے کیس کی تیاری کیلئے وقت مانگ لیا، جس کے بعد سماعت اکیس اکتوبر تک ملتوی کردی گئی۔

یاد رہے سپریم کورٹ نےڈینئل پرل قتل کیس میں عمرشیخ سمیت تمام ملزمان کو آئندہ ہفتے تک رہاکرنے سے روکتے ہوئے حکومت سندھ اورڈینئل پرل کے والدین کی اپیلیں ابتدائی سماعت کے لیے منظور کرلیں تھیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں