The news is by your side.

Advertisement

سپریم کورٹ‌ نے ارنب گوسوامی کی آخری امید پر بھی پانی پھیر دیا

نئی دہلی: بھارتی سپریم کورٹ نے متنازع اینکر ارنب گوسوامی کو بڑا دھچکا دے دیا۔

بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق متنازع اینکر ارنب گوسوامی کی جانب سے سپریم کورٹ میں دائر کی جانے والی درخواست پر چیف جسٹس آف انڈیا بوبڈے کی قیادت میں بننے والے بینچ نے سماعت کی۔

ارنب گوسوامی نے عدالت میں دائر کی جانے والی درخواست میں استدعا کی تھی کہ ممبئی پولیس کی ایف آئی آر کو منسوخ کرنے کا حکم جاری کیا جائے کیونکہ یہ مقدمہ بے بنیاد ہے۔

عدالت نے ارنب گوسوامی کی جانب سے دائر ہونے والی درخواست کو مسترد کرتے ہوئے اس معاملے کو ممبئی ہائی کورٹ سے رجوع کرنے کی ہدایت کردی۔

مزید پڑھیں: متنازعہ بھارتی اینکر ارنب گوسوامی کی مشکلات میں اضافہ

چیف جسٹس سپریم کورٹ آف انڈیا بوبڈے نے دوران سماعت ارنب گوسوامی سے استفسار کیا کہ ’آپ نے یہ درخواست ممبئی ہائی کورٹ میں دائر کیوں کہ نہیں کی؟ کیونکہ یہ معاملہ مہارشٹرا میں شروع ہوا تھا‘۔

ارنب گوسوامی کے وکیل نے بینچ کو آگاہ کیا کہ ممبئی ہائی کورٹ نے پہلے ہی اس ایکٹ کی آئینی حیثیت کو برقرار رکھنے کا حکم جاری کیا ہے جس کے بعد ہم نے سپریم کورٹ سے رجوع کیا۔

سپریم کورٹ نے ارنب گوسوامی کی درخواست کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ وہ اگر چاہیں تو ممبئی ہائی کورٹ سے رجوع کرسکتے ہیں۔

واضح رہے کہ گوسوامی کو 4 نومبر کو علی باغ پولیس نے خود کشی کے لیے اکسانے کے الزام میں گرفتار کیا تھا۔ جس کے بعد انہیں 11 نومبر کو سپریم کورٹ نے ضمانت دی۔

یہ بھی پڑھیں: ارنب گوسوامی کو گرفتاری کے بعد ایک اور بڑا دھچکا

شہری انوے نائیک اور اس کی والدہ کمود نے 2018 میں خودکشی کرلی تھی کیوں کہ گوسوامی اور دیگر دو ملزمان کی کمپنیوں نے انہیں مبینہ طور پر واجبات ادا نہیں کیے تھے، معاشی حالات سے تنگ آکر ماں بیٹے نے اپنی زندگی کا خاتمہ کرلیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں