The news is by your side.

Advertisement

اسکاٹ لینڈ: بزرگوں کو ویکسین کی جگہ نمکین پانی کا انجیکشن لگا دیا گیا

اسکاٹ لینڈ: بھولنے کی بیماری میں مبتلا بزرگوں کو ویکسین کی جگہ نمکین پانی کے انجیکشن لگ گئے۔

تفصیلات کے مطابق اسکاٹ لینڈ کے لنارک شائر میں اسکینڈل سے متاثرہ کیئر ہوم میں ڈیمنشیا کے 11 مریض ایک حیران کن غلطی کا شکار ہو گئے، جنھیں کووِڈ ویکسین کی بجائے نمکین محلول کا انجیکشن لگایا گیا۔

برطانوی میڈیا کے مطابق ہیلتھ بورڈ نے ہفتے کی رات اس غلطی کا اعتراف کیا اور معافی نامہ بھی جاری کیا گیا، تاہم یہ نہیں بتایا گیا کہ ایسی مزید کتنی غلطیاں ہوئی ہیں۔

اسکاٹش حکومت نے بھی اس واقعے کی تصدیق کر دی ہے لیکن حکومت کا بھی کہنا ہے کہ اس کے پاس ایسی مزید غلطیوں کے بارے میں درست معلومات موجود نہیں ہیں، تاہم ان دستاویزات میں جن میں اس ویکسین اسکینڈل کا انکشاف ہوا، کیئر ہوم میں کئی دیگر واقعات کا بھی ذکر کیا گیا ہے۔

بزرگ افراد کو پانی کا انجکشن دینے کا انکشاف ان کے طبی معائنے کے دوران ہوا، بتایا گیا کہ اس سے ان افراد کی صحت کے لیے کوئی خطرہ لاحق نہیں ہوا۔

دستاویزات میں انکشاف کیا گیا کہ نیشنل ہیلتھ سروس کی پریشان نظر آنے والی نرسوں نے، جو پچھلے سال 16 دسمبر کو درست ویکسین لگانے کے لیے ملبرے پہنچی تھیں، نے رہائشیوں کو نمکین محلول کی شیشیوں سے غلط انجیکشن لگائے۔

یہ قیاس کیا جاتا ہے کہ جب ویکسین کو فریزر سے نکال کر پگھلائی جانے لگے تو تھوڑی مقدار میں نمکین پانی (سیلائن سلوشن) کو خالص فائزر بائیو این ٹیک ویکسین کے ساتھ ملایا جانا چاہیے، اور اس کے بعد مریضوں کو لگائی جائے۔

اپوزیشن کی جانب سے اس واقعے کو خطرناک قرار دیا گیا ہے، ان کا کہنا ہے کہ اس طرح کے اور بھی واقعات رونما ہو چکے ہیں، جو حکومتی ویکسین پروگرام پر سنگین سوال اٹھاتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں