The news is by your side.

Advertisement

افغانستان میں سونے کے سب سے بڑے ذخیرے کی تلاش شروع

کابل: افغانستان میں موجود اہم اور دنیا کے سب بڑے سونے کے ذخائر’بیکٹرین ٹریژر‘ کی تلاش کا کام شروع کر دیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق دنیا کے سونے کے سب سے بڑے ذخیرے کی تلاش شروع ہو گئی، افغانستان میں ثقافتی کمیشن کے نائب سربراہ احمد اللہ واثق کا کہنا ہے کہ اگر اس ذخیرے کو افغانستان سے باہر منتقل کیا گیا ہے، تو یہ ملک کے خلاف غداری ہے۔

طالبان حکومت کے ذمہ دار کا کہنا تھا کہ ان کی حکومت سونے کے اس ذخیرے کے سلسلے میں سخت اقدامات کرنے جا رہی ہے۔

واضح رہے کہ دنیا میں سونے کے بڑے ذخائر میں شامل بیکٹرین (bactrian gold) ذخیرہ 40 برس قبل شبرغان سے برآمد ہوا تھا، اور سابقہ حکومت نے اس ذخیرے کو فروری میں صدارتی محل منتقل کر دیا تھا۔

بیکٹرین ٹریژر افغانستان کا ایک اہم اثاثہ سمجھا جاتا ہے، جسے فروری 2021 میں سابق حکومت صدارتی محل میں لائی تھی اور لوگوں کے لیے نمائش کے لیے رکھا گیا تھا۔

سوویت اور امریکی سائنس دانوں کا دعویٰ ہے کہ افغانستان میں تانبے، باکسائٹ، خام لوہے کے ساتھ ساتھ سونا اور سنگ مرمر اور لیتھیم جیسی بہت قیمتی معدنیات ہیں، ان سے حاصل ہونے والی کمائی لوگوں کی زندگی بدل سکتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں