The news is by your side.

Advertisement

شام میں جنگ بندی کا معاہدہ، روس نے فوج میں کمی کا اعلان کردیا

ماسکو: روسی صدر پیوٹن نے شام میں تعینات اپنے فوجیوں کی تعداد میں کمی کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ شام میں جنگ بندی کے لیے اپوزیشن جماعتوں اور باغیوں کے درمیان معاہدے طے ہوگیا ہے، جنگ بندی کے معاہدے میں روس اور ترکی ضامن ہیں۔

غیرملکی خبررساں ایجنسی کے مطابق روسی صدر نے شامی حکام کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اعلان کیا کہ شام میں جنگ بندی کے لیے اپوزیشن جماعتوں اور باغیوں کے درمیان معاہدہ طے ہوگیا ہے جس کی ضمانت روس اور ترکی نے لی ہے۔

مزید پڑھیں: ’’ شامی مہاجرین کی امداد، سعودی شہریوں نے ایک دن میں کروڑوں‌ روپے عطیہ کردیے ‘‘

شام کی فوج نے روسی صدر کے اعلان کے بعد جنگ بندی پر عملدرآمد کا اعلان کردیا اور شامی اپوزیشن اتحاد نے سیز فائر ڈیل کی حمایت کردی، سرکاری اطلاعات کے مطابق فوج آج رات 12 بجے سے تمام آپریشنز روک دے گی۔

شامی وزیردفاع نے کہا کہ ’’جنگ بندی کے معاہدے پر 7 اپوزیشن جماعتوں نے دستخط کیے ہیں جس پر عملدرآمد آج رات 12 بجے سے شروع ہوجائے گا‘‘۔

خیال رہے شام کافی عرصے سے جنگ کی لپیٹ میں تھا جس کے باعث ہزاروں شامی جاں بحق ہوئے اور متعدد زخمی ہوئے جبکہ حالات کے پیش نظر سینکڑوں افراد گھر چھوڑنے پر بھی مجبور ہوئے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں