The news is by your side.

Advertisement

ایس ای سی پی افسران کو چھاپے مارنے اورریکارڈ قبضے میں لینے کا اختیار مل گیا

اسلام آباد : سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان (ایس ای سی پی) افسران کو چھاپے مارنے اور ریکارڈ قبضے میں لینے کا اختیار مل گیا ہے ، افسران ٹھوس شواہد کی بنیاد پر دیوار، کھڑکی اور گاڑی کو بھی توڑ سکیں گے۔

تفصیلات کے مطابق وفاقی کابینہ نے ایس ای سی پی کے سیز اینڈ سرچ قوانین 2019 کی منظوری دیتے ہوئے ایس ای سی پی افسران کو چھاپے مارنے کا اختیار دینے کا نوٹیفیکیشن جاری کر دیا ہے۔

یہ رولز ایس ای سی پی ایکٹ1997 کے سیکشن کے 31 کے تحت تشکیل دیے گئے ہیں۔

نوٹیفکیشن کے مطابق سکیورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان (ایس ای سی پی) کو چھاپے مارنے ، ریکارڈ تحویل میں لینے کا اختیار ہوگا، افسران کو وفاق، صوبائی سطح پر چھاپے مارنے کا اختیار دیا گیا۔

جاری نوٹیفکیشن میں کہا گیا ایس ای سی پی افسران کو کسی بھی عمارت، دفتر میں جانے اور دستاویزات، لیپ ٹاپ، موبائل، دیگرسامان قبضے میں لینے کا اختیار ہوگا۔

افسران ٹھوس شواہد کی بنیاد پر دیوار، کھڑکی اور گاڑی کے شیشے بھی توڑ سکیں گے اور تمام ریکارڈ کو تفتیش کے لیے قبضے میں لے سکتے ہیں۔

مزید پڑھیں : عوام تھری اے نامی الائنس کمپنی میں سرمایہ کاری سے ہوشیار رہیں، ایس ای سی پی

یاد رہے ایس ای سی پی نے عوام کو متنبہ کیا تھا کہ وہ تھری اے نامی الائنس کمپنی میں کسی قسم کی سرمایہ کاری نہ کریں مذکورہ کمپنی غیر قانونی طور پر فنڈز یا سرمایہ کاری وصول کرنے میں ملوث پائی گئی ہے۔

کمپنی کی جانب سے عوام کو گمراہ کرنے پرتھری اے الائنس کے خلاف کمپنیز ایکٹ2017کی دفعہ301کے تحت اظہار وجوہ کا نوٹس بھی جاری کر دیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں