The news is by your side.

Advertisement

ایس ای سی پی کی نئی ترامیم متعارف

اسلام آباد: ایس ای سی پی نے غیر بینکاری مالیاتی کمپنیوں اور ریٹ کمپنیوں کے ضوابط میں ترامیم متعارف کروادی ہیں۔

سکیورٹیز اینڈ ایکس چینج کمیشن (ایس ای سی پی) نے غیر مالیاتی بینکاری کمپنیوں اور ریئل اسٹیٹ انوسٹمنٹ ٹرسٹ (ریٹ) کمپنیوں کو مستحکم بنانے اور ان میں کی گئی سرمایہ کاری کو مزید محفوظ بنانے کے لیے غیر بینکاری مالیاتی کمپنیوں کے ریگولیشن 2008 اور ریٹ ریگولیشن 2015 میں ترامیم متعارف کروا دی ہیں۔

ریگولیشن میں ترامیم کے مطابق اگر کسی شخص جس کے ذمے کسی مالیاتی ادارے کے واجبات ہوں تو ایسا شخص فٹ اینڈ پراپر کے معیار کے مطابق تصور نہیں ہوگا۔ اسی طرح اگر کسی شخص کے ذمے کوئی رقم واجب الادا ہو اور وہ کسی کمپنی یا فرم میں چاہے چیف ایگزیکٹو یا ڈائریکٹر ہو، تو اس کمپنی کی اسٹیٹ بینک کی جانب سے جاری کی جانے والی سی آئی بی رپورٹ میں بھی یہ واجبات ظاہر ہوں گے، تو ایسا شخص بھی فٹ اینڈ پراپر کے معیار کے مطابق تصور نہیں ہوگا۔

ایسے تمام اشخاص جن کو فٹ اینڈ پراپر کے معیار پر پورا اترنا چاہیئے کمیشن کو ایک حلف نامہ جمع کروائیں گے کہ ان اشخاص یا ایسی کمپنیوں جن میں وہ چیف ایگزیکٹو یا ڈائریکٹر ہیں یا جن کے واحد مالک ہیں، کے ذمے کسی مالیاتی ادارے کے واجبات واجب الادا نہیں ہیں۔

ان ترامیم سے غیر مالیاتی کمپنیوں اور ریٹ کمپنیوں کے ڈائریکٹرز کے فٹ اینڈ پراپر کے معیارات میں ہم آہنگی پیدا ہوگی، کمپنیوں میں شفافیت اور استحکام پیدا ہوگا اور سرمایہ کاروں کا اعتماد بڑھے گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں