site
stats
پاکستان

ایس ای سی پی ریکارڈ میں تبدیلی ثابت، چیئرمین قصوروارقرار

اسلام آباد : ایف آئی اے نے چیئرمین ایس ای سی پی کے حوالے سے اپنی تحقیقاتی رپورٹ میں کہا ہے کہ ظفرالحق حجازی نے ادارے کے ریکارڈ میں تبدیلی کی۔ ایف آئی اے نے چیئرمین کیخلاف مقدمہ درج کرنے کی بھی سفارش کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ایف آئی اے نے تحقیقاتی رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرادی، جس سے پاناما جےآئی ٹی کا ایس ای سی پی پر ریکارڈ ٹمپرنگ کا الزام درست ثابت ہوگیا، ایف آئی اے نے کہا ہے کہ ظفرالحق حجازی نے ایس ای سی پی کےریکارڈ میں تبدیلی کی۔

اٹھائیس صفحات پرمشتمل انکوائری رپورٹ میں شریف خاندان کی کمپنیوں سے متعلق ریکارڈ میں ردو بدل کی تصدیق کی گئی۔ رپورٹ میں سفارش کی گئی ہے کہ ظفرالحق حجازی نے چوہدری شوگرملز کی انکوائری رپورٹ میں تبدیلی کرائی ان کے خلاف مقدمہ درج کیاجائے۔

تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق ظفرحجازی نے ماتحت عملے کو ناجائز کام کرنے کے لیے غیرقانونی احکام دیئے اور دباؤ ڈالا، رپورٹ میں چیئرمین ایس ای سی پی کےخلاف تعزیرات پاکستان کی دفعات چارسو چھیاسٹھ، چارسو اکہتراور انیس سو سینتالیس ایکٹ کے تحت فوجداری مقدمہ چلانے کی سفارش کی گئی ہے۔

غیرقانونی احکام ماننے اورغفلت پر ڈائریکٹر ماہین فاطمہ اورافسرعلی عظیم اکرم کےخلاف بھی محکمانہ کارروائی کی سفارش کی گئی ہے۔

واضح رہے کہ پچیس جون دوہزارسولہ کو ہونے والے اےآروائی نیوز کے پروگرام پاور پلے میں اینکر ارشد شریف نے شریف خاندان سے متعلق منی لانڈرنگ کا انکشاف کیا تھا۔

اس حوالے سے جےآئی ٹی نے بارہ جون کو ریکارڈ ٹمپرنگ کےسنگین الزامات کی رپورٹ عدالت میں جمع کرائی جس پرسپریم کورٹ نے ایف آئی اے کوتحقیقات کاحکم دیا تھا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top