The news is by your side.

Advertisement

روس نے سلامتی کونسل کی قرارداد کو ‘ویٹو’ کردیا

نیویارک: روس نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں یوکرین کے خلاف ‘جنگ’ روکنے کی قرار داد ویٹو کردی۔

غیرملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق قرارداد میں یوکرین کے خلاف روسی ’جارحیت‘ کی مذمت کی گئی تھی اور فوج کے فوری انخلاء کا مطالبہ کیا گیا تھا، سلامتی کونسل کے 15 میں سے 11 اراکین نے قرارداد کے حق میں ووٹ دیا تھا، چین، بھارت اور متحدہ عرب امارات نے ووٹنگ میں حصہ نہیں لیا۔

اجلاس کے بعد اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انٹونیوگوٹریس نے کہا کہ روسی فوجیوں کو بیرکس میں واپس جاناچاہیے، امن کو ایک اور موقع دینا چاہیے، ہمیں ہمت نہیں ہارنی چاہیے۔

دوسری جانب روسی دستوں نے یوکرین کے شہر ‘میلیٹوپول’ کا کنٹرول سنبھال لیا ہے،میلیٹوپول میں کسی قسم کی مزاحمت کاسامنا نہیں کرناپڑا۔

یہ بھی پڑھیں: یوکرین کے لیے امداد کے ڈھیر لگ گئے

روسی وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ امریکا،مغربی ممالک کےساتھ تعلقات ’’پوائنٹ آف نوریٹرن‘‘پرپہنچ رہے ہیں، ترجمان روسی وزارت خارجہ ماریہ زخاروا نے کہا کہ امریکا سے تعلقات اب معمول کے مطابق نہیں چلیں گے۔

انہوں نے کہا کہ مغرب روس پر اپنی کالونی بنانےکا نظریہ مسلط کرنے میں ناکام رہا۔

ادھر کینیڈا، امریکہ، برطانیہ اور یورپی یونین نے جمعے کے روز روس پر مزید پابندیاں لگانے کا اعلان کیا جن میں صدر پوتن اور وزیر خارجہ سرگئی لاوروف پر ذاتی پابندیاں بھی شامل ہیں۔

 

Comments

یہ بھی پڑھیں