The news is by your side.

Advertisement

ملک بھرکی قومی شاہراہوں پرگاڑیوں اورمسافروں کی چیکنگ لازمی قرار

اسلام آباد : ملک بھر میں امن و امان کو یقینی بنانے اور دہشت گردی کے خدشات سے نبرد آزما ہونے کے لیے وفاق اور صوبوں کو نیا ایس او پی جاری کر دیا گیا، نئے ایس او پی میں قومی شاہراہوں پر سفر کے دوران گاڑیوں اور مسافروں کی چیکنگ اور شناخت کو لازمی قرار دیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق نئے ایس او پیز میں بین الصوبائی سرحدوں کی مانیٹرنگ سخت کرنے کی ہدایات جاری کی گئی ہیں، اس کے علاوہ جڑواں شہروں سمیت ملک بھر میں تحصیل سے ضلع اور ڈویژنل ہیڈ کوارٹرز کی جانب قومی شاہرات پر سفر کرنے والے مسافروں اور ٹرانسپورٹ کو چیکنگ کے بغیرکسی قسم کی داخلے کی اجازت نہ دینے کے علاوہ کالعدم تنظیموں سے وابستہ متحرک افراد کو پابند سلاسل بنانے کی ہدایات بھی جاری کردی گئی ہیں۔

شمالی وزیرستان اور بلوچستان کے علاقے خوشاب و تربت میں دہشت گردوں کے حملوں کے تناظر میں وزارت داخلہ حکومت پاکستان کی جانب سے پنجاب،سندھ، خیبر پختونخوا،بلوچستان،گلگت بلتستان کے ساتھ ساتھ ریاست آزاد جموں و کشمیر کے چیف سیکرٹریز، سیکرٹریز داخلہ ، پولیس فورس کے سربراہان،وفاقی اداروں کے ذمہ داروں کو جاری ہدایات میں قرار دیا گیا کہ عوام کے جان و مال کا تحفظ اولین ترجیح ہے۔

ایس او پیز میں کہا گیا ہے کہ عوام کے جان و مال کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے ضروری ہے کہ ملک بھر میں قومی شاہراہوں پر سفر کرنے والے شہریوں اور ٹرانسپورٹ کی چیکنگ کے لئے نہ صرف بین الصوبائی سرحدوں بلکہ بڑے شہروں سے لے کر تحصیل ہیڈ کوارٹرز کی سطح تک مربوط نظام اپنا یا جائے ۔

نئے اصول و ضوابط کے مطابق کسی بھی صورت میں اسکریننگ کے بغیر عوامی اور سرکاری ٹرانسپورٹ کو داخلے کی اجازت نہ دی جائے ،اس ضمن میں سبز نمبر پلیٹ کی حامل گاڑیوں کی بھی چیکنگ ضرور کی جائے ۔

ذرائع کے مطابق وفاقی حکومت کی جانب سے کہا گیا کہ مساجد، مدارس، امام بارگاہوں کے ساتھ غیر مسلم شہریوں کے مقدس مذہبی مقامات کی حفاظت کے علاوہ تمام اہم مذہبی اور سیاسی اور انتظامی شخصیات کی حفاظت کے لئے سکیورٹی پلان روزانہ کی بنیاد پر اپ گریڈ کئے جائیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ تمام صوبائی حکومتوں کو ہدایت کی گئی کہ وہ اپنے اپنے زیر انتظام محکمہ اوقاف کے تحت موجود وقف مزارات اور وہاں آنے والے زائرین کی حفاظت کے لئے بھی انتظامات کو یقینی بنائیں اور اس ضمن میں ماضی میں جاری ہدایات اور ایس او پیز پر ہر ممکنہ طور پر عمل درآمد یقینی بنائیں۔ تمام صوبے اپنے اپنے ایسے علاقے جو نہ صرف کم آباد ہیں، ان کی مسلسل مانیٹرنگ کا عمل اپنائیں، تاکہ ان علاقوں میں کسی بھی طور پر قانون شکن عناصر کا مسکن نہ بن سکے ۔

ذرائع کے مطابق وفاقی حکومت کی جانب سے سرکاری املاک، سرکاری ٹرانسپورٹ کی خصوصی حفاظت کے لئے بھی ہدایات جاری کی گئی ہیں، تاکہ خدانخواستہ کسی قسم کے ناخوشگوار واقعہ سے بچا جا سکے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں