site
stats
پاکستان

فوجی عدالتوں کا نفاذ ‘ رضاربانی اور اسحاق ڈارآمنے سامنے

اسلام آباد: چیئرمین سینیٹ رضا ربانی نے رولنگ دیتے ہوئے کہا کہ ایوان میں طے کیا گیا تھا کہ آرمی ایکٹ اورآئین میں قبل ازوقت ترمیم کی جائے، اگر اس پر عمل کیا جاتا تو ہمیں آج یہ دن نہ دیکھنا پڑتا، وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا کہ فوجی عدالتوں سے متعلق بل پیر کوقومی اسمبلی سے منظورکرالیں گے.

تفصیلات کے مطابق سینیٹ کے اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا کہ فوجی عدالتوں سے متعلق بل پیر کوقومی اسمبلی سےمنظور کرا لیں گے، ساری سیاسی جماعتوں نے بل پراتفاق کیا ہے.

اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ ملک کو دہشت گردی کا سامنا ہے ہم علیحدہ صفحے پر نہیں ہیں، قیام امن کے لئے ہرممکن کوشش کریں گے، حکومت سے جو بہتر ہوسکتا ہے کر رہے ہیں۔

وزیر خزانہ کے مطابق ملک کی تعمیر و ترقی کے لئے حکومت اعلیٰ اقدامات کرتی رہے گی، 2 سال میں نظام اچھا کرنے کی کوشش کی اب بھی کریں گے، ہم جانتے ہیں کہ عدالتی اور الیکشن اصلاحات پر بھی مزید کام کرنا ہے.

چیئرمین سینیٹ رضا ربانی نے رولنگ دیتے ہوئے کہا کہ ایوان میں طے کیا گیا تھا کہ آرمی ایکٹ اورآئین میں قبل ازوقت ترمیم کی جائے، سینیٹ نے ابتدائی طور پربتا دیا تھا اور اس حوالے سے بل بھی پیش کئے تھے،  ترمیم کے لئے بلز کوبطور ورکنگ پیپرز ہی استعمال کر لیا جاتا،اگر ان کو دیکھا جاتا تو ہمیں آج یہ دن نہ دیکھنا پڑتا تاہم بدقسمتی سے ایسا ممکن نہ ہوسکا۔

یاد رہے کہ رواں ماہ پیپلز پارٹی کی قیادت فوجی عدالتوں کی مدت میں توسیع پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ فوجی عدالتوں کے مسئلے کو عددی اکثریت کی بجائے اتفاق رائے سے حل کیا جائے.

اس لئے پیپلزپارٹی نے کل جماعتی کانفرنس کا انعقاد کیا تھا،تاہم ایم کیو ایم پاکستان نے اے پی سی میں شرکت نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے جس سے پیپلزپارٹی کو آگاہ کر دیا گیا ہے جبکہ تحریک انصاف نے بھی کانفرنس کا بائیکاٹ کیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top