The news is by your side.

Advertisement

سینیٹ میں شو آف ہینڈز کیلئے آئینی ترمیم کی ضرورت ہوتی ہے، مریم نواز

لاہور : ن لیگ کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ سینیٹ الیکشن میں شوآف ہینڈز کیلئے آئینی ترمیم کی ضرورت ہوتی ہے، 500نشستوں پر ضمنی انتخابات نہیں کرائے جاسکتے۔

جاتی امراء میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سینیٹ الیکشن ایک مہینہ پہلے کروائیں یا ایک مہینہ بعد، اس سے آپ اپنی حکومت نہیں بچاسکتے، آپ کو اپنے ایم پی ایز اور ایم این ایز پر اعتماد نہیں رہا، حکومتی ایم پی ایز اور ایم این ایز اپنے حلقوں میں جانے کے قابل نہیں رہے۔

مریم نواز کا کہنا تھا کہ سینیٹ الیکشن میں شو آف ہینڈز کیلئے آئینی ترمیم کی ضرورت ہوتی ہے،اسے ایک آرڈیننس کے ذریعے بلڈوز نہیں کیا جاسکتا، سپریم کورٹ قانون کی تشریح کرسکتی ہے مگر قانون سازی پارلیمنٹ ہی کرے گی، امید ہے سپریم کورٹ مایوس نہیں کرے گی۔

ن لیگ کی نائب صدر نے کہا کہ الیکشن کمیشن آئینی ادارہ ہے اس کے اختیارات کو نظر انداز کیا جارہا ہے، آئین و قانون کا حلیہ بگاڑنے کی باتیں کی جارہی ہیں، کیا آپ سپریم کورٹ کے چیف جسٹس بھی بننا چاہتے ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں ن لیگی رہنما نے کہا کہ استعفے آنے کے بعد500نشستوں پر ضمنی انتخابات نہیں کرائے جاسکتے، یہ کہتے ہیں کہ الیکشن کرادیں گے یہ کوئی خالہ جی کا گھر نہیں، یہ سمجھتے ہیں ان کی دھمکیوں سے کوئی مرعوب ہوجائے گا، ہم چوڑیاں پہن کر نہیں بیٹھے رہیں گے۔

مریم نواز کا کہنا تھا کہ ٹف ٹائم کے باوجود مسلم لیگ ن نواز شریف کی قیادت میں متحد ہے، اس میں کوئی بھی شخص دونوں جانب نہیں کھیل رہا، ن لیگ بہت سے امتحانات سے گزری ہے، انہوں نے ن لیگ توڑنے کی بہت کوشش کی پر ندامت کا سامنا کرنا پڑا۔

مریم نواز نے صحافیوں کو بتایا کہ بلاول بھٹو نے کل فون کرکے بلایا ہے، کوشش ہوگی کہ لاڑکانہ پہنچوں اور بینظیر بھٹو کے مزار پر حاضری دوں، اتحاد میں جھگڑے اور تفریق کی سپورٹ نہیں کرتی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں