The news is by your side.

Advertisement

پاکستان میں 5 ارب ڈالر کی غیر قانونی تجارت کی جا رہی ہے، وزارت تجارت

اسلام آباد: ملک میں پانچ ارب ڈالر کی غیر قانونی تجارت کی جا رہی ہے، وزارت تجارت کے حکام نے اعتراف کیا کہ افغان ٹرانزٹ ٹریڈ نے ہماری صنعت کو نقصان پہنچایا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹ کی کامرس کمیٹی کے اجلاس میں وزارت تجارت نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا ہے کہ ملک میں پانچ ارب ڈالر کی غیر قانونی تجارت ہورہی ہے۔

حکام نے اس بات کا بھی اعتراف کیا کہ افغان ٹرانزٹ ٹریڈ نے ہماری صنعت کو نقصان پہنچایا،ان کا کہنا تھا کہ اگر سی پیک پر کنٹینر اترنے لگے تو ملکی صنعت تباہ ہوجائے گی۔

بریفنگ میں بتا یا گیا کہ ٹیکس ٹو جی ٹی پی شرح نو فیصد سے بڑھ نہیں سکی، مینوفیکچرنگ پر 29 فیصد ٹیکس کی وجہ سے مقامی صنعت بدحالی کا شکار ہے، گڈز پر جی ایس ٹی ساڑھے سترہ فیصد کر دیا گیا ہے۔

برآمدات میں کمی اور درآمدات میں اضافے کی بنیادی وجہ جی ایس ٹی میں اضافہ ہے، کوئلہ سے توانائی کے منصوبہ کوئلہ ترسیل کا نظام نہ ہونے کے باعث سازگار نہیں ہے۔

سینیٹر شبلی فراز کا کہنا تھا کہ ایک ملک نے پاکستان کے ساڑھے آٹھ سو ملین ڈالر دینے ہیں لیکن حکومت خاموش تماشائی بنی بیٹھی ہے۔

حکومت ان ساڑھے آٹھ ملین ڈالر سے ایف 16 ہی خرید لیتی، سینیٹر الیاس بلور کا کہنا تھا کہ تمام فری ٹریڈ ایگریمنٹ میں نقصان صرف اور صرف پاکستان کا ہوا ہے۔

 

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں