پیراڈائز لیکس، سینیٹ نے ایف بی آر اور اسٹیٹ بینک سے تفصیلات طلب کرلیں paradise leaks
The news is by your side.

Advertisement

پیراڈائز لیکس، سینیٹ نے ایف بی آر اور اسٹیٹ بینک سے تفصیلات طلب کرلیں

اسلام آباد : سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ نے پیرا ڈائز لیکس کا نوٹس لیتے ہوئے ایف بی آر،  ایس ای سی پی اور اسٹیٹ بینک سے تفصیلات طلب کرلیں.

یہ فیصلہ سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کے چیئرمین سلیم مانڈی والا کی زیر صدارت ہونے والے اجلاس میں کیا گیا، چیئرمین قائمہ کمیٹی نے کہا کہ ٹیکس چوری پاکستان کا سب سے اہم ایشو ہے.

چیئرمین کمیٹی سینیٹرسلیم مانڈوی والا نے کہا کہ با اثر اور طاقت ور طبقات ٹیکس چوری میں ملوث ہیں اور متعلقہ ادارے بڑے ٹیکس چوروں کے خلاف کارروائی کرنے سے کتراتے ہیں جس کی ملکی خزانے کو نقصان پہنچتا ہے.

 اسی سے متعلق : پیراڈائز لیکس، سابق وزیراعظم شوکت عزیز بھی ٹیکس چور نکلے

سلیم مانڈوی والا نے کہا کہ ایف بی آر پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اس ادارے نے پاناما لیکس کی تحقیقات کو دفن کر دیا ہے بلکہ ایف بی آر نے سابق وزیراعظم نواز شریف اور وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے لیے ریکارڈ میں ٹیمپرنگ بھی کی ہے.

 یہ پڑھیں : نوازشریف نے جان بوجھ کر اثاثے چھپائے، عدالت کا تفصیلی فیصلہ

سلیم مانڈوی والا نے کہا کہ ایف بی آر افسران کرپٹ افراد کو بچانے میں مصروف ہیں جب کہ دوسری جانب پاکستان کا پیسہ کھلےعام بیرون ملک بھیجا جا رہا ہے لیکن کوئی چیک اینڈ بیلنس رکھنے والا نہیں.

چیئرمین قائمہ کمیٹی برائے خزانہ نے کہا کہ پاکستان میں سالانہ 500 ارب سے زائد کی ٹیکس چوری ہورہی ہے جسے ٹیکس چوروں کے خلاف یکساں قانون کے تحت کارروائی کرکے روکا جا سکتا ہے کیوں کہ ٹیکس چوری روکے بغیر پاکستان کی معیشت ٹھیک نہیں ہوسکتی.


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں