The news is by your side.

Advertisement

70 فیصد بیماریاں جانوروں سے منتقل ہوتی ہیں: قائمہ کمیٹی برائے صحت کو بریفنگ

اسلام آباد: سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے صحت کے اجلاس میں کمیٹی کو بتایا گیا کہ 70 فیصد بیماریاں جانوروں سے منتقل ہوتی ہیں، انسداد ڈینگی کی ٹریننگ کے لیے افسران آسٹریلیا جائیں گے۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے صحت کا اجلاس چیئر پرسن ڈاکٹر خوش بخت شجاعت کی زیر صدارت ہوا، اجلاس میں قومی ادارہ صحت (این آئی ایچ) کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر عامر اکرام نے بریفنگ دی۔

اپنی بریفنگ میں ڈائریکٹر این آئی ایچ نے بتایا کہ بلوچستان میں پبلک ہیلتھ لیبارٹری کا قیام عمل میں لایا گیا ہے اور اسے پنجاب، سندھ، گلگت اور آزاد کشمیر میں شروع کر دیا گیا۔

ڈاکٹر عامر کا کہنا تھا کہ ادارے میں ڈے کیئر سینٹر بھی بنایا گیا۔ آئی ٹی حب بنایا گیا ہے، لائبریری کی حالت درست کی گئی۔ افسران انسداد ڈینگی کی ٹریننگ کے لیے آسٹریلیا جائیں گے۔

سیکریٹری صحت اللہ بخش مالک کا کہنا تھا کہ جنوری فروری میں اینٹی ڈینگی آپریشن شروع کردیا جائے گا، 70 فیصد بیماریاں جانوروں سے منتقل ہوتی ہیں۔ برطانیہ 2.8 ملین پاؤنڈ کی گرانٹ دے رہا ہے۔

کمیٹی رکن مہر تاج نے کہا کہ باہر اینٹی بائیوٹک بغیر نسخے کے نہیں ملتی، یہاں مل جاتی ہے جس پر عامر اکرام نے کہا کہ ملک میں 80 فیصد غیر ضروری دواؤں کا استعمال ہوتا ہے۔

کمیٹی کی چیئر پرسن خوش بخت شجاعت نے کہا کہ میڈیکل اسٹورز بھی تو بغیر لائسنس کے کھل جاتے ہیں۔ کریانہ کے اسٹور سے بھی پیناڈول مل جاتی ہے۔

کمیٹی رکن لیاقت خان نے کہا کہ پشاور میں 180 کا زینیکس کا پیکٹ بلیک میں 5 ہزار کا مل رہا ہے جس پر ڈاکٹر عامر نے کہا کہ نوٹ کر لیا ہے، میں ڈریپ سے بات کروں گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم ویکسین پر 2 ارب ڈالر خرچ کر دیتے ہیں۔ شروع میں ویکسین تھوڑی مہنگی پڑے گی، 3 سے 4 سالوں میں سستی ہوجائے گی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں