The news is by your side.

Advertisement

پاکستان مخالف حلقوں کو خوش کرنے کی کوشش پر بلاول کو شرم آنی چاہیئے، سینٹرفیصل جاوید

بلاول یاد رکھیں پیپلز پارٹی اب ماضی کا قصہ بن چکی ہے

اسلام آباد : سینٹرفیصل جاوید کا کہنا ہے کہ ہمارے بہادرسپاہیوں نے امن کیلئے جو کچھ کیا بلاول اس پر پانی پھیرنا چاہتے ہیں، پاکستان مخالف حلقوں  کو خوش کرنےکی کوشش پر ان کوشرم آنی چاہیئے۔

تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف کے سینٹرفیصل جاوید نے بلاول بھٹو کے ٹوئٹ پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ بلاول پاکستان کی منفی تصویر کشی میں مصروف ہیں، ہمارے بہادرسپاہیوں نےامن کیلئےجوکچھ کیابلاول اس پرپانی پھیرناچاہتےہیں۔

فیصل جاوید کا کہنا تھا کہ پاکستان پوری دنیا کیلئے امن کا پیغامبر بن کر ابھرا ہے، دہشت گردی کیخلاف جنگ میں ہم نے 70 ہزار جانوں کا نذرانہ پیش کیا، بلاول قوم کو بتائیں وہ کس کی زبان بول رہے ہیں۔

بلاول کی جماعت نے پاکستان میں ڈاکہ ڈالا اور لوٹ مار کا مال باہر منتقل کیا

انھوں نے کہا یہ نیا پاکستان ہےجس میں گھٹیاتماشوں سےآپ کوکوئی فائدہ نہیں پہنچے گا، ہم امن پسند قوم ہیں اور امن ہی چاہتے ہیں، سندھ کی 70 فیصدآبادی غربت کے نیچے سسک رہی ہے، آپ اورآپ کے والد نے 30سالہ اقتدار میں عوام کیلئے کیا کیا۔

فیصل جاوید کا کہنا تھا کہ پاکستان مخالف حلقوں کوخوش کرنے کی کوشش پر بلاول کوشرم آنی چاہیئے، کرپشن کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنا، عوام کو مصیبت سے نکالنا عمران خان کا عزم ہے، آپ کو پورا زور چوری کا مال اور بیرونِ ملک جائیدادیں بچانے پر لگ رہا ہے۔

بلاول یاد رکھیں پیپلز پارٹی اب ماضی کا قصہ بن چکی ہے

انھوں نے مزید کہا بلاول یاد رکھیں پیپلز پارٹی اب ماضی کا قصہ بن چکی ہے، بلاول کی جماعت نے پاکستان میں ڈاکہ ڈالا اور لوٹ مار کا مال باہر منتقل کیا۔

یاد رہے پیپلز پارٹی چیئرمین بلاول بھٹو نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر اپنے بیان میں کالعدم تنظیموں کی الیکشن میں سپورٹ لینے والے وزرا کو وفاقی کابینہ سے الگ کرنے کا مطالبہ  کیا تھا۔

بلاول بھٹو کا کہنا تھا انتہاپسندی،کالعدم تنظیموں کی ماضی کی طرح سپورٹ نہیں کرنی چاہیے، ایسےگروپوں سے حکومت کو دوری اختیارکرنی چاہیے۔

پی پی چیئرمین نے کہا تھا  ایسے وزرا کو نکالنے کے مطالبے پر مجھے اینٹی اسٹیٹ قرار دے دیا، موت کی دھمکیاں اورنیب نوٹسز دئیے گئے، یہ سب کچھ ہمیں اصولی مؤقف سے نہیں ہٹاسکتے، این ایس سی پارلیمنٹری کمیٹی بناکرگروپوں کیخلاف کارروائی کریں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں