The news is by your side.

Advertisement

کشمیریوں کے لیے خون کے آخری قطرے تک لڑیں گے، سراج الحق

پشاور: امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ سیکڑوں کشمیری قیادت نے نیلسن منڈیلا سے زیادہ وقت جیل میں گزارا ہے، ہم کشمیریوں کے لیے خون کے آخری قطرے تک لڑیں گے۔

تفصیلات کے مطابق امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ مقبوضہ وادی میں اب تک لاکھوں کشمیری شہید ہوچکے ہیں، اس وقت بھی ساری قیادت جیلوں میں ہے، 80 لاکھ کشمیری مسلمان جیل کی زندگی گزار رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دنیا جانتی کہ 57 دنوں میں کشمیریوں پر کیا گزری ہے، اس وقت کشمیر کے چوک چوراہے خون میں رنگے ہوئے ہیں۔

سراج الحق نے کہا کہ حکومت بہت خوش ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے اقوام متحدہ میں زبردست تقریر کی ہے، ہماری حکومت کہتی ہے یوٹرن لینا کامیاب لیڈر کی نشانی ہے، خطرہ ہے حکومت پھر یوٹرن لے گی۔

مزید پڑھیں: مقبوضہ کشمیر میں کرفیو کا 56 واں روز

امیر جماعت اسلامی نے کہا کہ آزاد کشمیر کا علاقہ پاکستانی قوم نے قربانیاں دے کر آزاد کرایا ہے، خیبرپختونخوا کے عوام نے پہلے بھی قربانی دی آج بھی تیار ہے، ایسا فیصلہ کریں جس سے کشمیر بھارتی فوج کا قبرستان بن جائے۔

واضح رہے کہ مقبوضہ کشمیر میں آج مسلسل 56ویں روز بھی کرفیو برقرار ہے اور مواصلات کا نظام مکمل پر معطل ہے، قابض انتظامیہ نے ٹیلی فون سروس بند کررکھی ہے جبکہ ذرائع ابلاغ پرسخت پابندیاں عائد ہیں۔

کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق مواصلاتی نظام کی معطلی، مسلسل کرفیو اور سخت پابندیوں کے باعث لوگوں کو بچوں کے لیے دودھ، زندگی بچانے والی ادویات اور دیگر اشیائے ضروریہ کی شدید قلت کا سامنا ہے۔

کشمیر میڈیا سروس کے مطابق وادی میں کرفیو کے باعث 3 ہزار 9 سو کروڑ کا نقصان ہو چکا ہے، وادی میں کھانا میسر ہے اور نہ ہی دوائیں۔ سرینگر اسپتال انتظامیہ کے مطابق کرفیو کے باعث روزانہ 6 مریض لقمہ اجل بن جاتے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں