کابل: ہلمند کے ضلع میں امریکی فضائی حملہ، ملا عبدالمنان سمیت 29 طالبان ہلاک
The news is by your side.

Advertisement

کابل: امریکی فضائی حملہ، ملا عبدالمنان سمیت 29 طالبان ہلاک

کابل: افغانستان کے صوبے ہلمند میں امریکی فضائی حملہ ہوا جس کے نتیجے میں طالبان طالبان ملٹری کمیشن کے سربراہ ملا عبدالمنان سمیت 29 طالبان ہلاک ہوگئے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق افغانستان کے صوبے ہلند میں امریکی فضائی کارروائی میں طالبان ملٹری کمیشن کے سربراہ ملا عبدالمنان سمیت 29 طالبان ہلاک ہوگئے، طالبان نے ملا عبدالمنان کی ہلاکت کی تصدیق کردی ہے۔

صوبے ہلمند کے گورنر محمد یاسین خان کے مطابق طالبان کمانڈر اپنے دیگر ساتھیوں سے میٹنگ کے لیے نوزاد ڈسٹرکٹ پہنچا تھا جب اسے نشانہ بنایا گیا۔

کابل کے سینئر سیکیورٹی آفیسر کا کہنا ہے ملا عبدالمنان طالبان کا انتہائی اہم کمانڈر تھا جس کی ہلاکت سیکیورٹی اہلکاروں کی بڑی کامیابی ہے۔

گزشتہ روز افغانستان میں کیے جانے والے امریکی فضائی حملے میں ایک خاندان کے بچوں اور خواتین سمیت 10 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

سابق صوبائی گورنر نے بتایا کہ مقامی افراد نے ہلاک ہونے والوں کی لاشیں دکھائیں اور فضائی حملے کے خلاف احتجاج بھی ریکارڈ کرایا۔

صوبائی حکومت کے ترجمان عبداللہ حسرت نے دعویٰ کیا کہ فضائی حملے میں 4 جنگجو بھی ہلاک ہوئے تاہم شہریوں کی ہلاکت سے متعلق تحیقیقات کا آغاز کردیا گیا ہے۔

مزید پڑھیں: افغانستان میں امریکی فضائی حملہ، 30 شہری ہلاک

واضح رہے کہ 28 نومبر کو افغانستان کے صوبے ہلمند میں ہی امریکی فضائی حملے کے نتیجے میں 30 شہری ہلاک ہوگئے تھے۔

نیٹو حکام کا کہنا تھا کہ فضائی حملہ زمینی فورسز کی درخواست پر کیا گیا، جس میں طالبان ٹھکانے کی نشاندہی پر کمپاؤنڈ کو نشانہ بنایا گیا۔

افغان صوبے ہلمند کے گورنر محمد یاسین خان نے کہا تھا کہ فضائی حملہ ضلع گرمسر میں طالبان جنگجوؤں کے خلاف کیا گیا جس میں طالبان اور عام شہریوں کا جانی نقصان ہوا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں